Friday , September 21 2018
Home / سیاسیات / جھونپڑیوں کے انہدام کے خلاف کجریوال کے گھر پر احتجاجی مظاہرہ

جھونپڑیوں کے انہدام کے خلاف کجریوال کے گھر پر احتجاجی مظاہرہ

غازی آباد۔15 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کے چیف منسٹر اروند کجریوال کے کوشنبی میں واقع گھر پر آج عوام کے ایک گروپ نے مظاہرہ کرتے ہوئے شادار میں گذشتہ روز چند جھونپڑیوں کے انہدام پر احتجاج کیا ۔ شاہ دار کے گھگی پہلوان علاقہ کے قریب چھوٹا نگر میں کل ٹھیک اُس وقت 8 جھونپڑیاں منہدم کردی گئی ہیں جب اروند کجریوال رام لیلا میدان پر نئے چیف

غازی آباد۔15 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کے چیف منسٹر اروند کجریوال کے کوشنبی میں واقع گھر پر آج عوام کے ایک گروپ نے مظاہرہ کرتے ہوئے شادار میں گذشتہ روز چند جھونپڑیوں کے انہدام پر احتجاج کیا ۔ شاہ دار کے گھگی پہلوان علاقہ کے قریب چھوٹا نگر میں کل ٹھیک اُس وقت 8 جھونپڑیاں منہدم کردی گئی ہیں جب اروند کجریوال رام لیلا میدان پر نئے چیف منسٹر کی حیثیت سے حلف لے رہے تھے ۔ چیف منسٹر کجریوال کی رہائش گاہ پر آج صبح دھرنا دینے والے 40افراد میں شامل ایک 30سالہ خاتون وجئے ونی نے کہا کہ ’’ افسروں کا ظلم تو دیکھئے ‘ انہوں نے نہ صرف ہمارے سامان کی توڑ پھوڑ اور ہم سے گالی گلوج کی بلکہ خاتون کانسٹبلس نے ہمیں زدوکوب کیا اور حتی کہ چھوٹے بچوں کو بھی نہیں چھوڑا گیا ‘‘ ۔ تاہم مقامی پولیس نے کہا کہ یہ افراد‘ سرکاری اراضی پر جھونپڑیاں ڈالنے کی کوشش کررہے تھے اور شکایت موصول ہونے پر پولیس نے صرف انہیں روک دیا ۔

ایک سینئر پولیس عہدیدار نے کہا کہ ’’ پولیس ‘درحقیقت اپنے طور پر کبھی بھی کسی تعمیر کو منہدم نہیں کرتی ‘ یہ دراصل اراضی کے مالک ادہر کا کام ہوتا ہے ‘ ہمارا رول محض اس ( انہدامی ) کارروائی کے دوران سیکیورٹی فراہم کرنا ہوتا ہے تاکہ امن و قانون برقرار رکھا جاسکے ‘‘ ۔ اس انہدامی کارروائی کے دوران مداخلت کرنے والے کئی افراد زخمی بھی ہوئے ہیں ۔ احتجاجیوں نے عام آدمی پارٹی کے مقامی رکن اسمبلی رام نواس گوئیل پر بھی تنقید کی ۔ ایک برہم شخص نے کہا کہ ’’ کارروائی سے ایک دن قبل چند ملازمین پولیس گوئیل سے ملاقات کیلئے پہنچے تھے ‘ ہمیں یقین تھا کہ وہ ہماری تائید میں نمائندگی کریں گے لیکن دوسرے دن ہماری جھونپڑیاںمنہدم کردی گئیں ‘‘ ۔ گوئیل نے کہا کہ دہلی میں رائے دہی سے صرف ایک دن قبل یہ جھونپڑیاں ڈالی گئی تھیں ‘ مقامی افراد اور پولیس نے 13فبروری کو مجھے اس واقعہ سے واقف کروایا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT