Monday , January 22 2018
Home / ہندوستان / جہیز لینے والوں کا نکاح نہ پڑھنے علماء کا فیصلہ

جہیز لینے والوں کا نکاح نہ پڑھنے علماء کا فیصلہ

بہار کے ضلع نالندہ میں ائمہ مساجد کی مہم کو مسلمانوں کی تائید

بہار کے ضلع نالندہ میں ائمہ مساجد کی مہم کو مسلمانوں کی تائید
پٹنہ ۔ 15 ۔ اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے ایک ضلع کے مسلم علماء نے مطالبہ کے ساتھ جہیز لینے اور دینے والوں کی شادی تقاریب میں عقد نکاح نہ پڑھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ مسلمانوں میں جہیز کے مطالبہ کے بڑھتے ہوئے رجحان پر فکرمند بہار کے ضلع نالندہ کے آئمہ کی تنظیم نے دو دن قبل منعقدہ اجلاس میں یہ فیصلہ کیا ۔ نالندہ میں بہار شریف امارات شرعیہ مسلم تنظیم کے سربراہ قاضی منصور عالم نے کہا کہ ’’اس ضلع میں جہیز لینے اور دینے والوں کے نکاح نہ پڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’جہیز کے مطالبہ کی حوصلہ شکنی کیلئے یہ ایک تاریخی قدم ہے ۔ جہیز لینے والوں کو خبردار کرنے کیلئے یہ ایک سماجی بائیکاٹ بھی ہے‘‘۔

مولانا منصور عالم نے کہا کہ نالندہ میں اس فیصلہ پر کامیاب عمل آوری کے بعد بہار کے دیگر اضلاع تک وسعت دی جائے گی اور اس ریاست کے تمام اضلاع میں ایسی ہی مہم چلانے کیلئے آئمہ مساجد سے اپیل کی جائے گی ۔ مسلم برادری نے آئمہ کی اس مہم کا خیرمقدم کیا ہے ۔ پٹنہ کی ایک مسلم تنظیم ادارہ شرعیہ کے صدر غلام رسول بلیاوی نے کہا کہ ’’جہیز کی مانگ کی بڑھتی ہوئی لعنت کا مقابلہ کرنے اور اس کے خلاف مسلمانوں میں شعور بیداری کیلئے یہ ایک مثبت مہم ہے ۔ میں اس اقدام کی تائید کیلئے تیار ہوں ‘‘۔ ریلوے کے ایک ریٹائرڈ ملازم حاجی محمد شفیع اللہ خاں جو ضلع گیا میں اب سماجی خدمت انجام دے رہے ہیں ، کہا کہ اسلام میں جہیز کا کوئی تصور نہیں ہے لیکن یہ بڑی بدبختی کی بات ہے کہ مسلمان اس پر عمل کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT