جیتنے والے قائدین کو ہی پارٹی میںشامل کیا جائے گا : کانگریس

نئی دہلی 8 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی صدر جی پرمیشورا نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہاکہ پارٹی ایسے مزید نئے چہروں کو پارٹی میں شامل کرنے سے گریز نہیں کرسکتی جن کے اندر کامیاب ہونے کی صلاحیت ہو۔ اُنھوں نے یہ بات اُس وقت کہی جبکہ چند روز قبل ہی اپوزیشن کے تین ارکان اسمبلی کی کانگریس میں شمولیت اختیار کی تھی۔ اُنھوں نے یہ واضح کیاکہ کامیاب ہونے کی صلاحیت ہی اہم ترجیح ہے۔ واضح رہے کہ تین ارکان اسمبلی بی ایس آنند سنگھ (بی جے پی)، بی ناگیندرا (آزاد رکن اسمبلی) اور اشوک کھینی (کرناٹک مکلا پکشا پارٹی) نے چند روز قبل کانگریس میں شمولیت اختیار کی تھی جس کے بعد اپوزیشن جماعتوں نے شدید تنقید کرتے ہوئے کہاکہ حکمراں جماعت اپنی صفوں میں داغدار سیاسی قائدین کو جگہ دے رہی ہے۔ تاہم پرمیشورا نے ان الزامات کو مسترد کردیا اور ساتھی ہی کہاکہ وہ کانکنی سے وابستہ بی جے پی قائد گالی جناردھن ریڈی کی شمولیت کے امکان کو خارج کردیا۔ پی ٹی آئی کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں اُنھوں نے کہاکہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں ہر سیٹ پر کامیاب ہونے والے امیدواروں کی نامزدگی ہماری ترجیح ہے۔ اُنھوں نے اشارہ کیاکہ جاریہ ماہ کے اواخر میں ممکنہ امیدواروں کی فہرست بھی جاری کردی جائے گی۔ اُنھوں نے واضح کیاکہ اُنہی امیدواروں کو پارٹی ٹکٹ دے گی جن کے اندر کامیاب ہونے کی صلاحیت بدرجہ اتم موجود ہو اور جو زمینی سطح پر قابل قبول ہو۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا اپوزیشن کے مزید ارکان کانگریس میں شامل کئے جانے کا امکان ہے، اُنھوں نے کہاکہ بی جے پی اور جے ڈی ایس کے کئی ارکان کانگریس میں شمولیت کے خواہشمند ہیں۔ تاہم وہ منتخب ارکان کو ہی پارٹی میں شامل کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ کانگریس میں شامل کئے گئے ارکان کے حوالہ سے پوچھے جانے پر اُنھوں نے کہاکہ مذکورہ تینوں ارکان اسمبلی کی شمولیت مکمل طور پر سیاسی فیصلہ ہے۔ اس میں کسی قسم کے دباؤ یا کوئی اور بات نہیں ہے۔ پرمیشورا جوکہ ایک دلت لیڈر ہیں اور جنھوں نے 2015 ء تا 2017 ء وزیرداخلہ کرناٹک کی حیثیت سے خدمات انجام دی ہیں، کہاکہ پارٹی آنے والے اسمبلی انتخابات میں ترقیاتی موضوعات پر کامیاب ہوگی۔ یہ پوچھے جانے پر کہ چیف منسٹر سدارامیا بی جے پی کو صرف فرقہ وارانہ مسائل پر ہی کیوں ہدف تنقید بنارہے ہیں، بجائے اس کے ترقیاتی مسائل پر اُن سے مقابلہ کریں۔ پردیش کانگریس صدر نے کہاکہ جب وزیراعظم نریندر مودی کرناٹک آکر 10فیصد کمیشن والی حکومت قرار دیتے ہیں تو پھر ہم خاموش کیوں بیٹھیں۔

TOPPOPULARRECENT