Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / جیہ للیتا کی تمام سرکاری اعزازات کے ساتھ آخری رسومات

جیہ للیتا کی تمام سرکاری اعزازات کے ساتھ آخری رسومات

مرینا بیچ پر انسانی سروں کا سمندر، ایم جی آر کی سمادھی کے دامن میں سپرد خاک، ششی کلا نے مذہبی رسوم ادا کئے۔ عوام میں رنج و غم کی لہر

چینائی 6 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ٹاملناڈو کی چیف منسٹر جیہ للیتا کے جسد خاکی کو آج لاکھوں سوگواروں نے بہ دیدہ نم سپرد لحد کیا۔ آنجہانی قائد کے سیاسی سرپرست و مربی آنجہانی ایم جی رامچندرن کی سمادھی کے دامن میں آہنی عزم کی حامل جراتمند خاتون رہنما کی مکمل سرکاری اعزازات کے ساتھ آخری رسومات ادا کی گئیں۔ جیہ للیتا کو سبز ساڑی بہت پسند تھی اور وہ کئی اہم اور یادگار موقعوں پر روایتی سبز ساڑی زیب تن کیا کرتی تھیں۔ اپنے آخری سفر میں بھی وہ سبز ساڑی میں ہی ملبوس تھیں۔ ان کے تابوت کو رنگ برنگے خوبصورت پھولوں سے سجایا گیا تھا اور جلوس جنازہ میں سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر ملک کی تقریباً تمام بڑی جماعتوں کے اہم قائدین نے شرکت کی۔ اس موقع پر لاکھوں مرد، خواتین، بوڑھے، نوجوان اور بچے سب اپنی محبوب رہنما کے انتقال کے صدمہ میں شدید جذبات سے مغلوب ہوگئے تھے اور جیہ للیتا کو ’’اماں‘‘ کے نام سے پکارتے ہوئے بے ساختگی کے ساتھ دھاڑے مار کر رو رہے تھے۔ جیہ للیتا کی رازدار سمجھی جانے والی انتہائی بھروسہ مند سہیلی ششی کلا نٹراجن جو کل رات سے اپنی محبوب قائد کے تابوت کے قریب مجسمہ غم بنی کھڑی رہی تھیں آج دن بھر بھی ساتھ رہیں بالآخر پُرفضاء مرینا بیچ پر ایم بی آر یادگار پر مذہبی رسومات ادا کیں۔ بعدازاں صندل کی قیمتی لکڑی سے بنائے گئے خوبصورت تابوت کو اُتارا گیا۔ جیسے ہی بندوقوں کے ذریعہ آنجہانی قائد کو آخری سلامی دی گئی وہاں موجود لاکھوں افراد شدید جذبات سے بے قابو ہوگئے اور ٹامل زبان میں ’’اماں واژہگہ‘ (اماں زندہ باد) کے نعرے لگائے۔ اس موقع پر چینائی کے اس ساحل پر انسانی سروں کا سمندر دیکھا گیا۔

ساری ریاست ٹاملناڈو اور بالخصوص چینائی میں عوام کی پسندیدہ فلمی اداکارہ اور سیاسی رہنما کی قد آدم تصاویر لگائی گئی تھیں اور جگہ جگہ پورٹریٹس پر پھول مالائیں چڑھائی گئی تھیں۔ ارتھی کے جلوس کے دوران غمزدہ پرستاروں نے اپنی محبوب قائد کے جسد خاکی پر پھول برسائے۔ 68 سالہ جیہ للیتا غیر شادی شدہ تھیں۔ انھوں نے کبھی بھی اپنی مذہبی شناخت اور عقیدہ کا اظہار نہیں کیا تھا۔ انھیں حیرت انگیز طور پر سپرد آتش کے بجائے دفن کیا گیا۔ آل انڈیا انا ڈی ایم کے کی سربراہ اور ٹامل ناڈو کی چیف منسٹر جیہ للیتا کے گزشتہ شب انتقال کے بعد اس ریاست میں عام زندگی عملاً مفلوج ہوگئی ہے۔ ان کے جسد خاکی کو آخری دیدار کے لئے تاریخی راجہ جی ہال میں رکھا گیا ہے جہاں محبوب قائد کو خراج عقیدت ادا کرنے والوں کی بے پناہ تعداد کے سبب انسانی سروں کا سمندر دیکھا گیا اور ساری فضاء ’’اماں‘‘ کے نعروں سے گونج رہی تھی۔ لاکھوں افراد آہ و زاری کرتے ہوئے بے قابو ہورہے تھے۔ فلمی اداکارہ سے سیاستداں بننے والی جیہ للیتا کے گزشتہ رات انتقال کے بعد جسد خاکی کو ان کی رہائش گاہ پوز گارڈن سے آج صبح راجہ جی ہال لایا گیا تھا۔ جہاں لاکھوں افراد اپنی انقلابی قائد ’’اماں‘‘ کا آخری دیدار کرنے کے لئے طویل قطاروں میں کھڑے تھے۔ 68 سالہ جیہ للیتا کو خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے وزیراعظم نریندر مودی کے بشمول متعدد سرکردہ سیاسی قائدین چینائی روانہ ہوگئے۔ جیہ للیتا چھ مرتبہ چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز رہیں۔

جیہ للیتا کی پسندیدہ سبز ساڑی میں لپیٹا ان کا جسد خاکی انا سلائی میں واقع راجہ ہال کی سیڑھیوں پر رکھا گیا۔ جہاں فوج کے چار اہلکاروں نے تابوت پر قومی ترنگا اُڑایا۔ ٹاملناڈو کے چیف منسٹر او پنیر سلوم ، ان کے وزارتی رفقاء، ارکان پارلیمنٹ اور ارکان اسمبلی، سینئر سرکاری عہدیدار سب سے پہلے خراج عقیدت ادا کرنے والوں میں شامل تھے۔ جیہ للیتا 22 ستمبر سے اپالو ہاسپٹل میں شریک تھیں جہاں دو ماہ سے زائد عرصہ تک زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد بالآخر کل رات آخری سانس لی۔ جیہ للیتا کی دیرینہ بھروسہ مند سہیلی ششی کلا نٹراجن مجسمہ غم بنی راجہ جی ہال میں جیہ للیتا کے تابوت کے پاس کھڑی رہیں۔ اس دوران لاکھوں افراد بہ دیدہ نم اپنی ’’اماں‘‘ کو آخری مرتبہ خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے طویل قطاروں میں کھڑے تھے۔ ساری فضاء اماں، اماں سے گونج رہی تھی۔ لاکھوں غمزدہ مرد ، خواتین اماں، اماں پکارتے ہوئے دھاڑے مار کر رو رہے تھے۔ اپنی محبوب لیڈر کے چہرہ کا آخری دیدار کرنے کے لئے بے چینی سے منتظر تھے۔ چینائی کی سڑکوں بالخصوص انا سلائی کی سڑکوں پر ٹریفک نظر نہیں آئی اور ہر طرف انسانی سروں کا سمندر نظر آرہا تھا۔ حکومت ٹاملناڈو نے ریاست میں تین دن کے سوگ کا اعلان کیا ہے۔ مرکز نے آج ایک روزہ سوگ کا اعلان کیا تھا۔ تمام مرکزی اور ریاستی عمارتوں پر قومی پرچم نصف بلندی پر لہرائے گئے تھے۔ ٹاملناڈو میں کل شام سے ہی بند جیسی صورتحال دیکھی گئی۔

 

جیہ للیتا کرشماتی قائد :منموہن سنگھ
نئی دہلی ۔ /6 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) جیہ للیتا کی موت پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے سابق وزیراعظم منومہن سنگھ نے انہیں ایک کرشماتی اور نمایاں قائد قرار دیا جنہیں عوام ہمیشہ یاد رکھیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ جیہ للیتا کے لاکھوں مداح ان کی بے وقت موت کا سوگ منارہے ہیں ۔ وہ ایک کرشماتی قائد تھیں اور اپنی اماں کو ٹاملناڈو کی عوام ان کے ریاست میں فلاحی کاموں کیلئے ہمیشہ یاد رکھیں گے۔

TOPPOPULARRECENT