Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / جی او 39 اور 42 سے دستبرداری کا مطالبہ

جی او 39 اور 42 سے دستبرداری کا مطالبہ

سیاسی جماعتوں و سماجی تنظیموں کا اجلاس ، پروفیسر کودنڈا رام و دیگر کا خطاب
حیدرآباد ۔ 20 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : سرپنچ اکاویلاکا تلنگانہ کے زیر اہتمام آج پریس کلب سوماجی گوڑہ میں رعیتو سیتما سمیتی پر گول میز کانفرنس منعقد ہوئی ۔ جس میں تلنگانہ کی سیاسی پارٹیاں جیسے جے اے سی ، بی جے پی ، وائی ایس آر کانگریس ، تلگو دیشم اور سماجی تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی ۔ کانفرنس کی صدارت پروفیسر کودنڈا رام صدر جے اے سی نے کی ۔ کانفرنس کے ذریعہ تمام سیاسی پارٹیوں نے متحدہ طور پر حکومت سے مانگ کی کہ جی او 39 اور 42 کو حکومت فوری طور پر دستبردار ہوجائے اور آرٹیکل 73 کے تحت گرام پنچایت کے 29 عہدیداروں کی تبدیلی اور وہیں حکومت اسٹامپ ڈیوٹی کو فوری کالعدم قرار دے اس کے علاوہ گرام پنچایت فنڈ کے احیاء اور اس کی رکاوٹوں کو فوری دور کرے ۔ کودنڈا رام نے کہا کہ حکومت سرپنچوں کے ساتھ ناروا سلوک کرنے سے نت نئے مسائل پیدا ہورہے ہیں ۔ انہیں جو اختیارات ماضی میں پٹیل پٹواری اور سرپنچ کو حاصل تھے اسے دوبارہ بحال کئے جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا معاملہ صرف سرپنچوں کے ساتھ دہرا نہیں ہے بلکہ تحصیلدار اور بینکس کے ذریعہ سبسیڈی دینے کے بجائے کمیٹیاں ڈال کر نت نئے منصوبے بنا رہی ہے ۔ انہوں نے حکومت کی جانب سے ساڑیوں کی تقسیم کو ایک بھونڈا مذاق قرار دیا ۔ ڈاکٹر کے لکشمن صدر بی جے پی تلنگانہ و رکن اسمبلی نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت اقتدار کے تین سال کے دور میں اور خصوصیت کے ساتھ گرام پنچایت اور کسانوں کے مسائل پر وہ ناکام ہے ۔ نئی ریاست میں مکمل طور پر پولیس اور لاٹھی کا نظام آچکا ہے ۔ بی وینکٹ رمنا ٹی آر ایس کانگریس نے کہا کہ حکومت زراعت کے شعبہ میں جو کمیٹیاں قائم کی ہیں اس سے اب تک کچھ فوائد کسانوں کو حاصل نہیں ہوئے ۔ بچی ریڈی ( تلگو دیشم ) نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر جی او 39 اور 42 کو کالعدم قرار دے اور سرپنچ کو جو اختیارات حاصل تھے اسے دوبارہ بحال کرے ۔ چنا ریڈی ( سی پی آئی ایم ) نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت ہر لحاظ سے مایوس کن مظاہرہ کررہی ہے اور کسانوں و دیگر طبقات کے 85 فیصد مسائل جوں کے توں برقرار ہیں ۔ حکومت فینانس کمیشن کو لاگو کیا اس کے باوجود سردمہری کی پالیسیاں اختیار کررہی ہے ۔ گوپالا راؤ ، جگاریڈی سرپنچ ، سمنگلی سرپنچ سنگاریڈی ، گنگا ریڈی ، سبھاش راتھوڑ ، ملنا ، اشوک ریڈی ، وینکٹ ریڈی ، چندرا ریڈی اور دیگر نے بھی مخاطب کیا ۔ اس کانفرنس میں عادل آباد ، نظام آباد ، ظہیر آباد ، جوگی پیٹ ، رنگاریڈی ، کوہیر ، کریم نگر ، ورنگل کے سرپنچوں نے شرکت کی ۔۔

TOPPOPULARRECENT