Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / جی ایس ٹی این ہیلپ ڈیسک کو روزانہ 10ہزار کالس

جی ایس ٹی این ہیلپ ڈیسک کو روزانہ 10ہزار کالس

نئی دہلی ، 11 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) جی ایس ٹی این ہیلپ ڈیسک فون کالس کی بھرمار سے پریشان ہے، اعداد و شمار میں دیکھیں تو روزانہ 10,000 کالس موصول ہورہے ہیں، جن کے ذریعہ مختلف نوعیت کے سوالات کئے جارہے ہیں، جیسے ’’میں کس طرح رجسٹر کرا سکتا ؍کرا سکتی ہوں؟‘‘ اور پھر پاسورڈس بھول جانے کا قدیم مسئلہ بھی سامنے آرہا ہے جبکہ حکومت نئے جی ایس ٹی سسٹم کے تعلق سے بیداری پیدا کرنے کی مہم چلا رہی ہے۔ کام اس قدر زیادہ ہے کہ جی ایس ٹی نٹورک اپنے کال سنٹرس میں افرادی قوت کو دوگنا کرکے دو ہفتے میں 400 ایجنٹس تک بڑھانے کی کوشش کررہا ہے تاکہ تمام سوالات سے نمٹا جاسکے اور انکم ٹیکس ریٹرنس کا بھی جائزہ لیا جاسکے جس کے ادخال کی شروعات ستمبر سے ہونے والی ہے ۔ جی ایس ٹی نٹورک جو سب سے بڑی بالواسطہ ٹیکس اصلاح کیلئے آئی ٹی سپورٹ تیار کرنے والی کمپنی ہے اُس نے 25 جون کو کال سنٹر کھولا اور 0120-4888999 کی تشہیر کرتے ہوئے اس ہیلپ لائن نمبر کے ذریعہ ٹیکس دہندگان کی مدد کرنا شروع کیا ۔ زائد از 69 لاکھ ایکسائیز ، ویاٹ اور سرویس ٹیکس ادا کرنے والے اب تک جی ایس ٹی این پورٹل پر منتقل ہوچکے ہیں اور 4.5 لاکھ نئے ٹیکس دہندگان بھی اس سسٹم میں داخل ہوچکے ہیں ۔ گڈس اینڈ سرویسس ٹیکس یکم جولائی سے نافذالعمل ہوا ۔ جی ایس ٹی این کو توقع ہے کہ مزید کاروبار اور تاجرین رجسٹریشن کرائیں گے یا جی ایس ٹی این پلیٹ فارم پر منتقل ہوجائیں گے ۔

 

ٹور آپریٹروں کے ذریعہ سفر حج کو جی ایس ٹی سے مستثنیٰ قراردینے کا مطالبہ
نئی دہلی ۔ 11 جولائی ۔(سیاست ڈاٹ کام) حج کمیٹی آف انڈیا کے سابق رکن حافظ نوشاد احمد اعظمی نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ قرعہ اندازی میں نام آنے سے محروم رہ جانے پر ٹور آپریٹروں کے ذریعہ سفر حج پر مجبور عازمین حج کو جی ایس ٹی سے مستثنیٰ قرار دیا جائے ۔ انھوں نے وزیراعظم نریندر مودی سے مداخلت کی اپیل کی ۔ انہوں نے کہا کہ ہندستانی حاجی عام طور پر مرکزی حج کمیٹی کے ذریعہ حج کرنا پسند کرتے ہیں اور سوا لاکھ کے حج کمیٹی کے کوٹے میں قرعہ اندازی میں نام نہ آنے پر نسبتاً زیادہ خرچ کا بوجھ اٹھا نے کی ہمت بٹور کر ہی عازمین ٹور آپریٹروں سے رجوع ہوتے ہیں۔ اس سال بھی پانچ لاکھ سے زیادہ عازمین نے درخواستیں دی تھیں۔

TOPPOPULARRECENT