Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایس ٹی سے دیوالی میں مٹھائی کی فروخت پر منفی اثر

جی ایس ٹی سے دیوالی میں مٹھائی کی فروخت پر منفی اثر

دکانات پر سناٹا، تجارتی برادری تجارتی مندی سے پریشانی میں مبتلا
حیدرآباد۔15اکٹوبر(سیاست نیوز) ملک میں جی ایس ٹی نے دیوالی کے دوران فروخت کی جانے والی مٹھائیوں کی فروخت پر بھی کافی گہرا منفی اثر ڈالا ہے۔شہر حیدرآباد کی سرکردہ مٹھائی کی دکانات جہاں دیوالی سے قبل مٹھائی کی تیاری اور خریداری کے اژدھا م ہوا کرتے تھے وہاں سناٹا دیکھا جا رہا ہے اور اب جبکہ دیوالی کیلئے 3دن باقی رہ گئے ہیں۔ملک کی تجارتی برادری دیوالی تہوار کے دوران تجارتی مندی سے پریشان ہے لیکن مٹھائی کی تیاری و فروخت کرنے والوں کی حالت مزید ابتر ہو تی جار ہی ہے کیونکہ مجموعی تجارت میں جہاں 30فیصد کی گراوٹ ریکارڈ کی جا رہی ہے وہیں مٹھائی کی دکانات پر فروخت میں 40تا 50فیصد کی گراوٹ دیکھی جانے لگی ہے اور آئندہ تین یوم کے دوران صورتحال معمول پر آنے یا فروخت میں اضافہ کی کوئی توقع بھی نظر نہیں آتی اور کہا جا رہا ہے کہ شہر حیدرآباد میں مٹھائیوں کی فروخت پر صرف جی ایس ٹی کا ہی نہیں بلکہ بارش کے موسم کا بھی اثر محسوس کیا جا رہا ہے کیونکہ دیوالی سے ایک ماہ قبل اور ایک ہفتہ قبل تک بھی بھاری مقدار میں دیوالی کے مٹھائی کی تیاری کے آرڈر دکانات کو موصول ہوا کرتے تھے لیکن اب ان میں نمایاں کمی ہوئی ہے اور کہا جا رہا ہے کہ مٹھائیوں کے بجائے چاکلیٹس اور دیگر اشیاء نے جو جگہ لی تھی اس سال ان اشیاء کے چلن میں بھی اضافہ دیکھا جا رہاہے کیونکہ ان اشیاء کے بارش میں خراب ہونے کے امکانات کم ہوتے ہیں جبکہ مٹھائیوں کے متعلق یہ خدشہ لگا رہتا ہے اسی لئے بارش کے موسم نے بھی مٹھائیوں کی تجارت پر اثر کیا ہے۔شہر کے سرکردہ مٹھائی کے تاجرین کی جانب سے جی ایس ٹی ‘ موسم‘ ای۔کامرس کے علاوہ دیگر اشیاء کو اس صورتحال کے لئے ذمہ دار قرار دیا جا رہا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ شہر میں مٹھائی کی فروخت میں ریکارڈ کی جانے والی کمی کیلئے ملک کی معیشت میں ریکارڈ کی جانے والی گراوٹ کے ساتھ ساتھ نقدی کی کمی بھی ہے۔تاجرین کا کہنا ہے کہ مٹھائی کے جو آرڈر دیئے جاتے تھے وہ بھی تجارتی حلقوں کی جانب سے دیئے جاتے تھے لیکن اس مرتبہ تجارتی حلقوں بالخصوص صنعتی اداروں کی ابتر حالت کے سبب ان کے آرڈر موصول نہیں ہوئے ہیں اوراس کے علاوہ ٹیکنالوجی سے واقف طبقہ کی جانب سے آن لائن خریدی کے ذریعہ تحائف روانہ کئے جانے لگے ہیں جو کہ دکانداروں کے لئے نقصان کا سبب بن رہے ہیں۔دونوں شہر وں میں دیوالی کے دوران 500 ٹن مٹھائیوں کی فروخت کی جاتی رہی ہے لیکن اس مرتبہ دیوالی کی مٹھائی کی فروخت میں 40فیصد تک کی گراوٹ ریکارڈ کی گئی ہے لیکن اس کے بر عکس شہر حیدرآباد و سکندرآباد میں خشک میوہ جات کی فروخت میں 20فیصد تک کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور چاکلیٹس اور بسکٹس کی فروخت میں 10فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور آن لائن خریداری کے کوئی اعداد و شمار نہیں ہیں اور مجموعی فروخت میں کوئی اضافہ ریکارڈ نہیں کیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT