Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / جی ایس ٹی نے ریاستوں کے درمیان رکاوٹیں کم کردیں : صدرجمہوریہ

جی ایس ٹی نے ریاستوں کے درمیان رکاوٹیں کم کردیں : صدرجمہوریہ

 

نئی دہلی ۔ 14نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نے آج کہاکہ گڈس اینڈ سرویسیس ٹیکس ( جی ایس ٹی ) کا نفاذ سنگ میل ہے اور نئے سسٹم نے ریاستوں کے درمیان رکاوٹیں گھٹاتے ہوئے زیادہ باقاعدہ معیشت تشکیل دی ہے ۔ یہاں پرگتی میدان میں 37و یں انڈیا انٹرنیشنل ٹریڈ فیر کا افتتاح کرتے ہوئے صدرجمہوریہ نے کہاکہ ملک کو عالمی معیشت کے روشن مقام کی حیثیت سے تسلیم کیا گیاہے اور دنیا نے اس کے تجارتی ماحول میں تبدیلی کا مثبت نوٹ لیا ہے ۔ کووند نے کہاکہ جی ایس ٹی کا نفاذ بلاشبہ تاریخی اقدام ہے اور اس نے ریاستوں کے درمیان حائل رکاوٹیں ختم کردی ۔ اس سے مشترک منڈی تشکیل دینے میں مدد ملی ہے اور معیشت میں زیادہ باقاعدگی آئی ہے ۔ نیز مینوفیکچرنگ سیکٹر کو تقویت دینے میں بھی مدد ملی ہے ۔ ان کوششوں کے سبب بیرونی راست سرمایہ (ایف ڈی آئی ) ملک میں 2016-17 میں 60 بلین امریکی ڈالر ہوگیا جو 2013-14 ء میں 36 بلین ڈالر تھا ۔ صدرجمہوریہ نے یہ بھی کہاکہ ہندوستان کی معاشی اصلاحات اور پالیسیوں کا بنیادی مقصد غربت کو دور کرنا اور کروڑہا عام خاندانوں کو خوشحالی کی طرف لے جانا ہے ۔ تجارت سے عام آدمی کو فائدہ ہونا ضروری ہے ، وہی بنیادی مقصد ہونا چاہئے ۔ حکومت کی بعض مہمات جیسے ’میک ان انڈیا‘، ’ڈیجیٹل انڈیا‘ ، ’اسٹارٹ اپ انڈیا‘ ، ’اسٹیل انڈیا‘ اور ’اسمارٹ سٹیز‘ کا تذکرہ کرتے ہوئے کووند نے کہاکہ یہ اقدامات معاشی اصلاحات کو بنیادی سطح پر استفادہ کنندگان کیلئے زیادہ بامعنی بنانے کی کوشش ہے ۔ جی ایس ٹی جس میں زائد از ایک درجن مرکزی اور ریاستی محاصل جیسے ایکسائیز ڈیوٹی ، سرویس ٹیکس اور ویاٹ ضم ہوگئے ، اس پر یکم جولائی سے عمل آوری شروع ہوئی ۔ ٹریڈ فیر کے تعلق سے کووند نے کہاکہ لگ بھگ تین ہزار ایکزیبیٹر بشمول 220 بیرونی کمپنیاں ، دیسی فرمس ، پبلک سیکٹر یونٹس اور ریاستیں اس فیر میں حصہ لے رہے ہیں۔ اس سال اس فیر کا موضوع’اسٹارٹ اپ انڈیا ، اسٹانڈاپ انڈیا‘ ہے اور شراکت دار ملک ویتنام اور جس ملک پر توجہ مرکوز کی جارہی ہے وہ جمہوریہ کرغزستان ہے ۔ صدرجمہوریہ نے کہا کہ یہ ممالک ہندوستان کے اہم تجارتی شراکت دار ہیں۔

TOPPOPULARRECENT