Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی حدود میں ایک لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر

جی ایچ ایم سی حدود میں ایک لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر

جاریہ سال حکومت کا نشانہ ۔ اضلاع میں دیڑھ لاکھ مکانات کی تعمیر ہوگی‘ کڈیم سری ہری
حیدرآباد 9 جولائی ( آئی این این ) ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے کہا کہ حکومت تلنگانہ کی جانب سے ریاست میں پسماندہ طبقات کیلئے ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیر پر 16,600 کروڑ روپئے خرچ کئے جائیں گے ۔ ورنگل رورل ضلع میں رامچندرا پورم کے مقام پر ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیر کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ریاست کے تمام اضلاع میں غریب عوام کیلئے ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اپنے انتخابی منشور کو پورا کیا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ جاریہ سال ریاست میں تقریبا ڈھائی لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کئے جائیں گے ۔ ان میں ایک لاکھ مکانات جی ایچ ایم سی حدود میں تعمیر کئے جائیں گے جبکہ دیڑھ لاکھ مکانات ریاست کے مختلف اضلاع میں تعمیر ہونگے ۔ کڈیم سری ہری نے الزام عائد کیا کہ سابقہ کانگریس حکومت کی جانب سے اندرما ہاوزنگ اسکیم کے تحت فراہم کردہ مکانات کے ذریعہ غریبوں کو قرضہ میں مبتلا کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے استفادہ کنندگان سے ایک روپیہ بھی حاصل کئے بغیر ڈبل بیڈ روم مکانات فراہم کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک منفرد اور مثالی اسکیم ہے جس کی ملک کی دوسری ریاستوں میں بھی تقلید کی جا رہی ہے ۔ ڈپٹی چیف مسنٹر نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے تلنگانہ کو ایک ویلفیر اسٹیٹ میں تبدیل کردیا ہے ۔ انہوں نے اپوزیشن جماعتوں کو تنقید کا نشانہ بنایا اور الزام عائد کیا کہ ٹی آر ایس حکومت اور کے چندر شیکھر راؤ کے خلاف اپوزیشن جماعتیں بے بنیاد الزامات عائد کر ہری ہیں کیونکہ انہیں خوف ہے کہ وہ سیاسی طور پر یکا و تنہا ہوجائیں گی ۔ اس تقریب میں رکن اسمبلی سی دھرما ریڈی ‘ ضلع کلکٹر پرشانت جیون پاٹل اور دوسرے عہدیداروں نے بھی شرکت کی ۔

TOPPOPULARRECENT