Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی کو 208کروڑ روپئے وصول

جی ایچ ایم سی کو 208کروڑ روپئے وصول

عوام کا غیر معمولی مثبت ردعمل‘ 24 نومبر تک ادائیگی کی سہولت
حیدرآباد۔14نومبر(سیاست نیوز) پرانے نوٹوں کے ذریعہ جائیداد ٹیکس کی ادائیگی کی سہولت نے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے کروڑوں کے بقایاجات کی وصولی کی راہ ہموار کردی ہے اورگذشتہ 5یوم کے دوران جی ایچ ایم سی کو جائیداد ٹیکس‘ ایل آر ایس اور ٹریڈ لائسنس کی اجرائی کی فیس کی شکل میں 208کروڑ روپئے سے زائد وصول ہو چکے ہیں۔ کمشنر جی ایچ ایم سی ڈاکٹر جناردھن ریڈی نے بتایا کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے فراہم کی گئی اس سہولت سے شہری استفادہ حاصل کر رہے ہیں۔جائیداد ٹیکس کی وصولی کے ذریعہ آج 55کروڑ روپئے کی وصولی ایک ریکارڈ ہے ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے جاری کردہ 24نومبر تک قدیم کرنسی کے منتخبہ مقامات پر استعمال کی سہولت کو دیکھتے ہوئے جی ایچ ایم سی نے جائیداد ٹیکس کی وصولی اور قدیم نوٹوں کی شکل میں وصولی کو یقینی بنانے کے انتظامات کرلئے ہیں اور اس منصوبہ کو 24نومبر تک توسیع دینے کا اعلان کیا ہے۔ توقع کی جا رہی ہے کہ جن لوگوں کو اس اسکیم سے فائدہ حاصل کرنے میں دشواریاں ہوئی ہیں وہ لوگ ان توسیع شدہ ایام کے دوران بہ آسانی اپنے جائیداد ٹیکس ادا کر سکتے ہیں۔بتایا جاتا ہے کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے اس سہولت کو مزید بہتر بنانے کیلئے عوام میں شعور اجاگر کرنے اور شہریوں کو اس جانب راغب کروانے کی مسلسل تحریک چلانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ شہرمیں ان بقایاجات کی وصولی کیلئے مقرر کردہ نشانہ مکمل کیا جا سکے۔منسوخ شدہ کرنسی کے چلن سے پریشان شہری اپنے جائیداد ٹیکس وغیرہ کی ادائیگی کی سہولت کے اعلان کے ساتھ ہی جی ایچ ایم سی کی جانب سے ٹیکس کی وصولی کی سہولت فراہم کرنے والے مراکز پر ٹوٹ پڑے ہیں اسی طرح محکمہ ٔ آبرسانی اور برقی نے بھی بقایاجات پرانی کرنسی میں وصول کرنے کا اعلان کیا ہے جہاں دونوں اداروں کو بھی بہترین ردعمل حاصل ہونے کی اطلاعات ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT