جے اے ایل ڈائرکٹرس کو شخصی جائیداد نہ نکالنے کی ہدایت

نئی دہلی ۔ 22 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے ایک رئیل اسٹیٹ ادارہ جئے پرکاش اسوسی ایٹس لمیٹیڈ کے بشمول پانچ پروموٹرس، 13 ڈائرکٹرس کو ہدایت کی ہیکہ وہ اپنی نجی جائیدادیں نہ نکالیں اس کمپنی کو یہ ہدایت بھی کی گئی کہ 14 اور 31 ڈسمبر تک بالترتیب 150 کروڑ روپئے اور 125 کروڑ روپئے جمع کروائیں۔ سپریم کورٹ بنچ نے اس رئیل اسٹیٹ ادارہ کی طرف سے آج جمع کردہ 275 کروڑ روپئے کا ڈیمانڈ ڈرافٹ بھی قبول کرلیا۔ چیف جسٹس دیپک مصرا، جسٹس اے ایم کھانویلکر اور جسٹس ڈی وائی چندرا چوڑ پر مشتمل بنچ نے ان ڈائرکٹروں کو ان کے ارکان خاندان کی جائیدادیں نکالنے سے بھی روک دیا اور وارننگ دی کہ اس کی ہدایت کی کسی بھی خلاف ورزی کی صورت میں فوجداری کارروائی کی موجب ہوسکتی ہے۔ اس بنچ نے ایک سینئر وکیل پون شری اگروال کو ثالثی مقرر کیا اور ہدایت کی کہ اندرون ایک ہفتہ ایک ویب پورٹل قائم کریں۔
کی جائے، جس میں گھروں کے امکانی خریداروں کی شکایات کے بشمول دیگر تمام تفصیلات پیش کی جائیں۔ سینئر وکلاء مکل روہتگی اور رنجیت کمار نے جو ڈائرکٹروں اور پروموٹر کی طرف سے رجوع ہوئے تھے، کہا کہ ان کی شخصی جائیدادوں کی تفصیلات کی پیشکشیسے متعلق قبل ازیں جاری کردہ احکام کی تعمیل میں حلفنامہ داخل کردیا گیا ہے۔ اس رئیل اسٹیٹ کمپنی کی طرف سے رجوع ہوتے ہوئے سینئر وکیل کپل سبل نے کہاکہ رقم کا انتظام کرنے کیلئے اس کمپنی کو خاطرخواہ وقت دیا جائے یا پھر یہ کمپنی بھی سہارا گروپ جیسا راستہ اختیار کرسکتے ہیں۔

پٹیل تحفظات پر کانگریس اور ہاردک کی باہم دھوکہ دہی:جیٹلی
نئی دہلی ۔ 22 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج کانگریس اور پتی دار قائد ہاردک پٹیل کے درمیان پٹیل برادری کو تحفظات کے بارے میں طئے شدہ معاہدہ پر اعتراض کرتے ہوئے مرکزی وزیر ارون جیٹلی نے کہا کہ کانگریس اور ہاردک ایک دوسرے کو دھوکہ دے رہے ہیں۔

 

 

TOPPOPULARRECENT