Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / جے سی دیواکر ریڈی کی اتوار کو تلگودیشم میں شمولیت

جے سی دیواکر ریڈی کی اتوار کو تلگودیشم میں شمولیت

حیدرآباد /19 مارچ (سیاست نیوز) سابق ریاستی وزیر جے سی دیواکر ریڈی نے کہا کہ وہ 23 مارچ کو تلگودیشم میں شامل ہو جائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ تلگودیشم کا مستقبل روشن ہے، جب کہ چندرا بابو نائیڈو ایک ویژن رکھنے والے قائد ہیں، لہذا ان کی قیادت میں عوام کا بھلا ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس نے سیما۔ آندھرا کے عوامی جذبات اور ہمارے مطالبات کو کوئ

حیدرآباد /19 مارچ (سیاست نیوز) سابق ریاستی وزیر جے سی دیواکر ریڈی نے کہا کہ وہ 23 مارچ کو تلگودیشم میں شامل ہو جائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ تلگودیشم کا مستقبل روشن ہے، جب کہ چندرا بابو نائیڈو ایک ویژن رکھنے والے قائد ہیں، لہذا ان کی قیادت میں عوام کا بھلا ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس نے سیما۔ آندھرا کے عوامی جذبات اور ہمارے مطالبات کو کوئی اہمیت نہیں دی۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے ریاست کی تقسیم لازمی ہونے کی صورت میں رائل تلنگانہ ریاست کی تشکیل کا مطالبہ کیا تھا، تاہم اسے قبول نہیں کیا گیا، لہذا وہ پارٹی سے مستعفی ہوکر اپنے حامیوں کے ساتھ تلگودیشم میں شامل ہو رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ سیما۔ آندھرا میں کانگریس پارٹی عوامی اعتماد سے محروم ہو چکی ہے، کانگریس کے پلیٹ فارم پر کوئی کھڑا ہونے کے لئے تیار نہیں ہے، جب کہ تمام وزراء، ارکان اسمبلی اور ارکان پارلیمنٹ کانگریس سے مستعفی ہو چکے ہیں۔ انھوں نے کانگریس کے باقی قائدین کو بھی تلگودیشم میں شامل ہونے کا مشورہ دیا۔ پون کلیان کے سیاسی میدان میں داخلہ پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے جے سی دیواکر ریڈی نے کہا کہ فلمی میدان اور سیاسی میدان میں کافی فرق ہے، چرنجیوی نے پرجا راجیم تشکیل دی تھی، ان کے جلسوں میں عوام کا ازدہام تھا، لیکن وہ مجمع ووٹ میں نہیں تبدیل ہو سکا، لہذا وہ نہیں سمجھتے کہ فلم اسٹار سیاسی طوفان کا رخ موڑسکیں۔ اگر پون کلیان عوامی خدمات انجام دینا چاہتے ہیں تو سیاسی میدان میں اپنی قسمت ضرور آزمائیں۔

TOPPOPULARRECENT