Monday , January 22 2018
Home / سیاسیات / جے ڈی یو اور آر جے ڈی پر قابو پانے اچھی منصوبہ بندی ضروری

جے ڈی یو اور آر جے ڈی پر قابو پانے اچھی منصوبہ بندی ضروری

بہار اسمبلی انتخابات سے پہلے راشٹریہ لوک سمتا پارٹی کے صدر کشواہا کا انٹرویو

بہار اسمبلی انتخابات سے پہلے راشٹریہ لوک سمتا پارٹی کے صدر کشواہا کا انٹرویو
نئی دہلی۔ 18؍جنوری (سیاست ڈاٹ کام)۔ بہار اسمبلی انتخابات سے پہلے جو جاریہ سال کے اواخر میں مقرر ہیں، مرکزی وزیر اوپیندر کشواہا نے اپنی حلیف پارٹی بی جے پی کو خبردار کیا، جو ریاستی انتخابات میں یکے بعد دیگرے اپنی کامیابیوں اور گزشتہ سال لوک سبھا انتخابات میں اپنی کامیابی کی خوشی سے سرشار ہے۔ راشٹریہ لوک سمتا پارٹی کے صدر نے ایک انٹرویو میں کہا کہ تھوڑی سی خبرداری ضروری ہوتی، اگر جے ڈی یو اور آر جے ڈی علیحدہ علیحدہ ہوتے، کیونکہ اب دونوں متحد ہوچکے ہیں۔ ہمیں زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے اور اپنی حکمت ِ عملی کا تعین احتیاط سے کرنا چاہئے۔ ان کا یہ اندیشہ بہار میں 10 نشستوں کے لئے گزشتہ سال اگسٹ میں منعقدہ ضمنی انتخابات کے نتائج کے پس منظر میں اہمیت رکھتا ہے جن میں این ڈی اے کو 4 نشستیں حاصل ہوئیں جب کہ جے ڈی یو، آر جے ڈی اور کانگریس کے اتحاد نے باقی 6 نشستوں پر قبضہ کرلیا۔

انھوں نے کہا کہ این ڈی اے کا دور اقتدار لوک سبھا انتخابات کے بعد تین ماہ کا تھا جب کہ تین ماہ قبل بی جے پی نے بہار میں لوک سبھا کی 40 نشستوں میں سے 31 پر کامیابی حاصل کی تھی۔ جے ڈی یو، آر جے ڈی اور کانگریس کے اتحاد نے یادوؤں، دلتوں اور دیگر پسماندہ طبقات میں سے بیشتر، کرمیوں اور مسلمانوں کی ایک قوسِ قزح قائم کردی۔ اس سے این ڈی اے کے لئے ایک سنگین چیلنج پیدا ہوگیا ہے۔ کشواہا کاراکات کے رکن پارلیمنٹ ہیں اور مرکزی وزیر مملکت برائے دیہی ترقیات، پنچایت راج، پینے کا پانی اور صفائی ہیں۔
وزیراعظم کی ماحولیات کمیٹی کا آج اجلاس
نئی دہلی۔ 18؍جنوری (سیاست ڈاٹ کام)۔ اعلیٰ سطحی ماحولیات کمیٹی کا ایک اجلاس وزیراعظم نریندر مودی کی زیر صدارت کل منعقد کیا جائے گا جس میں تبدیلیٔ ماحولیات کے بارے میں قومی لائحہ عمل کا جائزہ لیا جائے گا۔ وزارت ماحولیات کے ایک سینئر عہدیدار نے اس کی اطلاع دی۔
وہ ایک بااثر قائد ہیں اور کشواہا طبقہ پر ان کا کافی اثر و رسوخ ہے۔ اوپیندر کشواہا نے نتیش کمار کی جے ڈی یو سے ترکِ تعلق کرکے این ڈی اے کے ساتھ اتحاد کرلیا ہے۔ مودی لہر کے سہارے لوک سبھا انتخابات میں ان کی پارٹی نے 3 لوک سبھا نشستیں حاصل کی تھیں، حالانکہ کشواہا نے جنتا پریوار کے قومی سطح پر اتحاد کو مسترد کردیا ہے، لیکن انھیں یقین ہے کہ لالو پرساد کی آر جے ڈی اور نتیش کمار کی جے ڈی یو ریاست میں متحد رہیں گی۔

TOPPOPULARRECENT