حافظ سعید سے وید پرتاپ ویدک کی ملاقات سے حکومت پاکستان لاعلم

نئی دہلی 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی حملوں کے اصل سازشی ذہن حافظ سعید سے وید پرتاپ ویدک کی ملاقات پر پیدا شدہ تنازعہ کے درمیان پاکستان نے آج کہاکہ وہ اس ملاقات سے لاعلم ہے۔ اس نے زور دے کر کہاکہ حافظ سعید کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاسکتی کیوں کہ ان کے خلاف کوئی ثبوت ہی نہیں ہیں۔ جماعت الدعوۃ کے سربراہ سے ہندوستانی صحافی ویدک ک

نئی دہلی 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی حملوں کے اصل سازشی ذہن حافظ سعید سے وید پرتاپ ویدک کی ملاقات پر پیدا شدہ تنازعہ کے درمیان پاکستان نے آج کہاکہ وہ اس ملاقات سے لاعلم ہے۔ اس نے زور دے کر کہاکہ حافظ سعید کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاسکتی کیوں کہ ان کے خلاف کوئی ثبوت ہی نہیں ہیں۔ جماعت الدعوۃ کے سربراہ سے ہندوستانی صحافی ویدک کی ملاقات کا حکومت پاکستان کو علم نہیں ہے۔ پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے یہاں پریس کلب آف انڈیا کے میٹ دی پریس پروگرام کے دوران اس مسئلہ پر پوچھے گئے سوالات کے جواب میں کہاکہ یہ دو افراد کے درمیان ایک ملاقات تھی۔ ہماری حکومت کو اس ملاقات کا کوئی علم نہیں تھا اور نہ ہی حکومت ہند اس ملاقات سے واقف تھی۔ یہ صرف دو خانگی افراد کی ذاتی ملاقات سے بڑھ کر کچھ نہیں ہے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا پاکستانی انٹلی جنس ایجنسی آئی ایس آئی بھی اس ملاقات کے بارے میں علم نہیں رکھتی۔ اُنھوں نے صرف اتنا کہاکہ پاکستانی حکومت کو اس ملاقات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

اس سوال پر کہ کوئی دہشت گرد سرگرمیوں میں ان کے مبینہ طور پر ملوث ہونے پر جماعت الدعوۃ کے سربراہ کے خلاف حکومت پاکستان کارروائی کیوں نہیں کرتی۔ پاکستانی ہائی کمشنر نے کہاکہ حافظ سعید پر مقدمہ چلانے کے لئے کوئی ثبوت ہی نہیں ہے۔ پاکستان کی حکومت کو ٹھوس ثبوت چاہئے تاکہ انھیں جیل میں ڈال دیا جاسکے۔ ہمارے پاس ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ہے۔ اس لئے ہم انھیں جیل میں نہیں ڈال سکتے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا پاکستان پھر ایک مرتبہ ویدک کو اگر درخواست دینے پر ویزا دے گا عبدالباسط نے اس سوال کا راست جواب دینے سے گریز کیا اور کہاکہ وہ اکثر پاکستان کا دورہ کرتے ہیں۔ وہاں کانفرنس میں شرکت کے لئے وفد کے دیگر ارکان میں شامل رہتے ہیں۔

ویدک سے ملاقات کے مسئلہ پر ہندوستان میں اپوزیشن پارٹیوں نے زبردست ہنگامہ کیا تھا کیوں کہ وہ بی جے پی حامی اور یوگا گرو رام دیو کے ساتھی ہیں۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے بھی کل ہی کہا تھا کہ ہائی کمیشن کو اس ملاقات کا علم نہیں ہے۔ اس دوران 26/11 کے مبینہ ملزم حافظ سعید نے ٹوئیٹر پر لکھا ہے کہ ایک ہندوستانی صحافی ویدک سے ان کی ملاقات پر شوروغل مچانے سے ہندوستان کی تنگ نظری واضح ہوتی ہے۔ سعید ۔ ویدک کی ملاقات کو مسئلہ بناتے ہوئے سیاسی قائدین نے ان کی گرفتاری کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ اپنے ٹوئٹر پر حافظ سعید نے لکھا ہے کہ افسوس کی بات ہے کہ نام نہاد سیکولر ہندوستان اپنے صحافی ویدک کو ان سے ملاقات کو برداشت کرنے سے قاصر ہے۔ یہ تنگ نظری کی ایک اور بدترین مثال ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ہم دونوں نے 26/11 دہشت گرد مسئلہ پر بات چیت کی اور ہندوستان کی پیش کردہ ثبوت پر تبادلہ خیال کیا کیوں کہ پاکستان کی عدالت نے ان کے ثبوت کو مسترد کردیا ہے۔ آخر ہندوستان پاکستان کی عدالتوں کا احترام کیوں نہیں کرتا۔

حافظ سعید کے ساتھ بریانی اور چائے نوشی حب الوطنی نہیں : وی ایچ پی
اندور ۔ 19 ۔ جولائی : ( سیاست ڈاٹ کام ) : وشوا ہندوپریشد نے آج کہا کہ حافظ سعید جیسے دہشت گرد سے ملاقات حب الوطنی نہیں ۔ وی ایچ پی کے انٹرنیشنل ورکنگ پریسیڈنٹ پراوین توگاڑیہ نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ویدک جیسے جرنلسٹ کو یہ سوچنا چاہئے کہ دہشت گرد تنظیم کے سربراہ سے ملاقات مناسب تھی یا نہیں ۔ حافظ سعید کے ساتھ چائے نوشی اور بریانی کھانا حب الوطنی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکز سے ہمیں توقع ہے کہ پاکستان کے ساتھ اگر روابط بہتر ہوتے ہیں تو وہ حافظ سعید کی حوالگی کو یقینی بنائے گا ۔ اس کے علاوہ ہندوستان کے خلاف دہشت گردی کی روک تھام میں مدد ملے گی ۔ ایک اور سوال کے جواب میں توگاڑیہ نے کہا کہ بی جے پی کے انتخابی منشور میں ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر ، یکساں سیول کوڈ اور دفعہ 370 کی تنسیخ کا وعدہ کیا گیا ہے اور وی ایچ پی کو یقین ہے کہ پارٹی ان وعدوں کو پورا کرے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT