Saturday , November 18 2017
Home / جرائم و حادثات / حالت نشہ میں ڈرائیونگ پر سرکاری ملازمتوں سے محرومی

حالت نشہ میں ڈرائیونگ پر سرکاری ملازمتوں سے محرومی

ٹریفک پولیس کی کارروائی، سینکڑوں افراد کے خلاف چارج شیٹ، کئی جیل منتقل
حیدرآباد ۔ 26 اگست (سیاست نیوز) نشہ کی حالت میں گاڑی چلانے والے افراد کو اب ڈرائیونگ لائسنس سے ہاتھ دھونا پڑے گا جبکہ نوجوانوں کیلئے سرکاری ملازمتوں کے راستے بند کردیئے جائیں گے جو نشہ کی حالت میں گاڑی چلاتے ہوئے پولیس کے ہاتھوں گرفتار کرلئے جاتے ہیں۔ یہ بات جوائنٹ کمشنر آف پولیس حیدرآباد ٹریفک پولیس مسٹر ڈاکٹر رویندر نے بتائی۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ 25 اگست کو 1772 افراد کے خلاف چارج شیٹ داخل کی گئیں اور ان میں 229 افراد کو عدالت نے جیل کی سزاء سنائی ہے۔ بتایا جاتا ہیکہ نشہ کی حالت میں گاڑی چلانے والوں کے خلاف کارروائی میں یہ اب تک کی بڑی کارروائی ہے جس میں جیل کی سزاء کے علاوہ 13 افراد کے ڈرائیونگ لائسنس کو بھی منسوخ کردیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق یکم ؍ تا 25 اگست کی گئی کارروائی میں پولیس نے 1772 چارج شیٹ داخل کیں اور انہیں 3 اور 4 میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ سے رجوع کردیا جہاں عدالت نے 229 افراد کو جیل کی سزاء سنائی اور 13 افراد کے لائسنس کو ایک سال دوسری مرتبہ 6 ماہ کے عرصہ کیلئے منسوخ کردیا۔ ٹریفک پولیس نے اس دوران 37 لاکھ 91 ہزار 300 روپئے کے جرمانہ کو عائد کیا جن افراد کو عدالت نے جیل کی سزاء سنائی ہے ان میں 117 افراد کو دو دن، 35 افراد کو 9 دن، 37 افراد کو 10 دن، 14 افراد کو 6 دن، 10 افراد کو تین دن، 20 افراد کو 7 دن، 4 افراد کو 8 دن اور 4 افراد کو 7 دن کے علاوہ ایک فرد کو 5 دن کی سزاء سنائی گئی ہے۔ جوائنٹ کمشنر نے مزید بتایا کہ نشہ کی حالت میں گاڑی چلانے والے نوجوانوں کو بہت زیادہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا اور وہ بار بار گرفتاری کے بعد سرکاری ملازمت کیلئے اہل نہیں رہیں گے۔ انہوں نے بالخصوص بائیک رائیڈنگ کرنے والوں پر بھی سخت نظر رکھی گئی ہے اور انہیں بھی سخت کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

 

TOPPOPULARRECENT