Saturday , December 15 2018

حج پالیسی 2018 میں تبدیلیوں کے خلاف ہائی کورٹ میں مقدمہ

۔21 دسمبر کو سماعت مقرر ، سنٹرل حج کمیٹی اور فریقین کو جوابی حلفنامہ داخل کرنے کی ہدایت
حیدرآباد ۔13۔ ڈسمبر (سیاست نیوز) حیدرآباد ہائی کورٹ نے حج پالیسی 2018 ء میں تبدیلیوں کے خلاف دائر کردہ رٹ درخواستوں کی آئندہ سماعت 21 ڈسمبر کو مقرر کرتے ہوئے سنٹرل حج کمیٹی اور دیگر فریقین کو جوابی حلفنامہ داخل کرنے کی ہدایت دی ہے۔ جسٹس ایس وی بھٹ کے اجلاس پر آج 6 رٹ درخواستوں کی سماعت ہوئی جو 24 افراد کی جانب سے داخل کی گئی تھی ۔ درخواست گزاروں نے حج پالیسی 2018 ء میں 4 مرتبہ کے درخواست گزاروں سے متعلق محفوظ زمرہ کی برخواستگی کو چیلنج کیا ۔ درخواست گزاروں کے وکلاء نے عدالت سے کہا کہ مرکزی حکومت نے دو محفوظ زمرہ جات میں سے ایک زمرہ کو اچانک برخواست کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے مسلسل چوتھی مرتبہ درخواست گزاروں کو مایوسی ہوئی ہے۔ مسلسل 4 سال سے درخواست داخل کرنے والے افراد اس فیصلہ سے متاثر ہوئے ہیں ۔ عدالت سے درخواست کی گئی کہ اس زمرہ کو دوبارہ بحال کرنے کیلئے مرکزی حکومت کو ہدایت دی جائے۔ سنٹرل حج کمیٹی ، تلنگانہ حج کمیٹی اور محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے گورنمنٹ پلیڈرس نے بحث کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ حج اسلام میں صاحب استطاعت افراد پر واجب ہے اور غریبوں کے لئے یہ لازمی نہیں۔ وکلاء نے بتایا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق ہر پانچ سال میں حج پالیسی پر نظرثانی کی جانی ہے اور مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق 2018 ء میں حج پالیسی کا جائزہ لیا ۔ اس سلسلہ میں اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی گئی جس نے ایک محفوظ زمرہ کو برخواست کرنے کی سفارش کی ہے۔ 70 سال یا اس سے زائد عمر کے محفوظ زمرہ کو برقرار رکھا گیا ہے۔ عدالت کو بتایا گیا کہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق حج سیزن کی کارروائی کے آغاز کے بعد مداخلت نہیں کی جاسکتی۔ حج درخواستوں کی وصولی کا سلسلہ جاری ہے اور 22 ڈسمبر آخری تاریخ ہے۔ لہذا مرکزی حکومت حج پالیسی میں تبدیلی سے قاصر ہے۔ حکومت کے وکلاء نے سپریم کورٹ کے فیصلہ کی نقل عدالت میں پیش کی اور کہا کہ پارلیمنٹ ایکٹ کے تحت حج کمیٹی قائم کی گئی اور وہ مقررہ قواعد کے مطابق کام کر رہی ہے۔ جسٹس ایس وی بھٹ نے سپریم کورٹ کے فیصلہ کا جائزہ لینے کا تیقن دیا اور فریقین کو حلفنامہ داخل کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے آئندہ سماعت 21 ڈسمبر کو مقرر کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT