Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / حج کمیٹی کی شیعہ رکن کی حیثیت سے شمیم آغا نامزد

حج کمیٹی کی شیعہ رکن کی حیثیت سے شمیم آغا نامزد

ستار گلشنی کا نام حذف، عنقریب صدرنشین کا انتخاب
حیدرآباد۔23 ۔ جنوری (سیاست نیوز) تلنگانہ حج کمیٹی تشکیل میں ایکٹ کی خلاف ورزی سے متعلق تنازعہ کی یکسوئی کرکے حکومت نے نئے احکامات جاری کئے ہیں۔ جی او آر ٹی نمبر 23 آج شام جاری کیا گیا جس کے تحت حج کمیٹی میں شیعہ رکن کی حیثیت سے محترمہ شمیم آغا اہلیہ علمدار حسین نور خاں بازار کو شامل کیا گیا جبکہ 20 جنوری کے جی او میں شامل رکن ستار گلشنی کے نام کو حذف کردیا گیا۔ اس طرح حج ایکٹ 2002 ء کے مطابق 16 رکنی حج کمیٹی تشکیل دی گئی ۔ ایکٹ کے تحت رکن پارلیمنٹ اور ایک شیعہ رکن کی شمولیت لازمی ہے۔ شیعہ رکن کی عدم شمولیت سے تنازعہ پیدا ہوا۔ حکومت نے بورہ بنڈہ کے ٹی آر ایس قائد ستار گلشنی کو کسی اور ادارہ میں موقع دینے کا تیقن دینے پر مکتوب حاصل کرلیا ، جس میں انہوں نے شخصی وجوہات کے سبب حج کمیٹی کے رکن کی حیثیت سے خدمات انجام دینے سے معذوری ظاہر کی ہے۔ ان کی جگہ محترمہ شمیم آغا کو شامل کیا گیا جبکہ تیسرے زمرہ میں موجود ڈاکٹر عقیل ہاشمی کے نام کو چوتھے زمرہ میں رکھا گیا ہے۔ حج ایکٹ کے تحت 16 رکنی کمیٹی تشکیل دی جاسکتی ہے۔ لہذا حکومت کو ایک رکن کا نام حذف کرتے ہوئے شیعہ رکن کو شامل کرنا پڑا۔ شیعہ رکن کیلئے کئی شیعہ قائدین نے اپنی دعویداری پیش کی لیکن ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کے سفارش کردہ نام کو کمیٹی میں جگہ دی گئی ۔ اگزیکیٹیو آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور توقع ہے کہ کسی بھی وقت کمیٹی کا اجلاس طلب کرسکتے ہیں جس میں نئے صدرنشین کا انتخاب کیا جائے گا۔ ارکان کے اجلاس میں صدرنشین کا انتخاب کیا جاتا ہے۔ اس عہدہ کیلئے مسیح اللہ خاں کے نام کو چیف منسٹر نے منظوری دی ہے۔ لہذا ان کا انتخاب یقینی دکھائی دے رہا ہے ۔ اگرچہ بعض دیگر ارکان بھی صدارت کیلئے دوڑ میں ہے۔

TOPPOPULARRECENT