Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / حج کوٹہ میں تخفیف، ہزاروں عازمین کی محرومی کا اندیشہ

حج کوٹہ میں تخفیف، ہزاروں عازمین کی محرومی کا اندیشہ

22 مارچ کو دونوں ریاستوں کے عازمین کی قرعہ اندازی، محفوظ زمرہ میں درخواستیں زیادہ
حیدرآباد۔/18مارچ، ( سیاست نیوز) حج 2016کیلئے تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے حج کوٹہ کا اعلان کردیا گیا ہے۔ تلنگانہ کیلئے 2532 اور آندھرا پردیش کیلئے 2052عازمین کا کوٹہ الاٹ کیا گیا۔ دونوں ریاستوں کے عازمین کو امید تھی کہ جاریہ سال حج کوٹہ میں اضافہ ہوگا لیکن اضافہ تو درکنار سنٹرل حج کمیٹی نے دونوں ریاستوں کے کوٹہ میںکمی کردی ہے۔ تلنگانہ کو گزشتہ سال کے مقابلہ 220 اور آندھرا پردیش کو 193 کم کوٹہ الاٹ ہوا ہے۔ سنٹرل حج کمیٹی نے حج کوٹہ کے الاٹمنٹ کی اطلاع ریاستی حج کمیٹی کو دی۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ ریاستوں کو حج کوٹہ کے الاٹمنٹ میں تاخیر کے سبب قرعہ اندازی کی تاریخ میں تبدیلی کی گئی ہے۔ ریاستی حج کمیٹی سے مشاورت کے بعد سنٹرل حج کمیٹی نے 20مارچ کے بجائے 22 مارچ قرعہ اندازی کی تاریخ مقرر کی ہے۔ سنٹرل حج کمیٹی کو حکومت سعودی عرب کی جانب سے جملہ ایک لاکھ 36ہزار 30 کا کوٹہ الاٹ ہوا جس میں سے 36000 پرائیویٹ ٹور آپریٹرس کو الاٹ کئے گئے۔ باقی ایک لاکھ30 میں 1200 کا کوٹہ صدر جمہوریہ، نائب صدر اور وزارت خارجہ کیلئے خصوصی زمرہ کے تحت الاٹ کیا گیا ہے۔ 98820 میں سے ریاستوں کو تقسیم عمل میں آئی۔ تلنگانہ میں مردم شماری 2011کے مطابق مسلم آبادی 44لاکھ 64ہزار 699 ہے جس کے مطابق 2532 کوٹہ الاٹ کیا گیا ہے جبکہ تلنگانہ میں جملہ موصولہ درخواستوں کی تعداد 17423ہے۔ تلنگانہ میں دونوں محفوظ زمرہ جات کے تحت جملہ 2204 درخواستیں داخل کی گئی ہیں جن کا قرعہ اندازی کے بغیر راست انتخاب ہوچکا ہے۔ اس اعتبار سے تلنگانہ میں قرعہ اندازی صرف 328 عازمین کے انتخاب کیلئے ہوگی جس سے کئی ہزار عازمین کو سفر حج سے محرومی کا اندیشہ ہے۔ آندھرا پردیش میں مسلم آبادی 36لاکھ 17 ہزار 713 ہے جس کے مطابق 2052 کوٹہ الاٹ کیا گیا۔ آندھرا پردیش میں دونوں محفوظ زمرہ جات کے تحت 193درخواستیں داخل کی گئیں لہذا قرعہ اندازی 1859 عازمین کیلئے ہوگی۔ دونوں ریاستوں کیلئے مجموعی طور پر 4584 عازمین کا کوٹہ الاٹ ہوا ہے۔ گجرات، کیرالا اور اترکھنڈ کو زائد کوٹہ الاٹ کیا گیا جہاں چار مرتبہ مسلسل انتخاب سے محروم عازمین کو پانچویں مرتبہ اس زمرہ میں شامل کرتے ہوئے قرعہ اندازی کی صورتحال ہے کیونکہ محفوظ زمرہ جات میں درخواستوں کی تعداد مجموعی کوٹہ سے کہیں زیادہ بتائی گئی ہے۔ تلنگانہ میں داخل کی گئی درخواستوں اور الاٹ کردہ کوٹہ کے حساب سے 1:45 کا تناسب ہے جبکہ حیدرآباد میں یہ تناسب 1:115 ہے۔ حیدرآباد میں11487 اور کھمم میں 214 درخواستیں داخل کی گئیں۔ آندھرا پردیش میں سب سے زیادہ درخواستیں کرنول سے 777 داخل کی گئیں جبکہ سریکا کولم سے صرف 8درخواستیں داخل ہوئیں۔ بتایا جاتا ہے کہ جموں کشمیر کیلئے 1500اور لکشا دیپ کیلئے 250کا زائد کوٹہ الاٹ کیا گیا ہے۔ سنٹرل حج کمیٹی نے دونوں ریاستوں کی قرعہ اندازی کی متوقع تاریخ 22 مارچ 11-30 بجے دن تلنگانہ اور 3 بجے آندھرا پردیش کیلئے قرعہ اندازی ہوسکتی ہے۔قرعہ اندازی کے سلسلہ میں تلنگانہ حج کمیٹی نے انتظامات کا آغاز کردیا ہے۔ پروفیسر ایس اے شکور نے سنٹرل حج کمیٹی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے قرعہ اندازی کی تاریخ سے واقف کرایا۔ گزشتہ سال تلنگانہ سے 2969 اور آندھرا پردیش سے 2404 عازمین روانہ ہوئے تھے۔قرعہ اندازی کے فوری بعد حج کیمپ کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز ہوجائیگا۔ عازمین حج کی پروازوں کا 4اگسٹ سے آغاز ہوسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT