Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / حج ہاؤز کے اندرونی و بیرونی حصوں میں زائد سیکوریٹی کی تعیناتی

حج ہاؤز کے اندرونی و بیرونی حصوں میں زائد سیکوریٹی کی تعیناتی

باب الداخلہ پرمیٹل ڈیٹکٹرس، وزیٹرس کی تلاشی، داخلہ پاسیس کی اجرائی میں تخفیف
حیدرآباد۔/12 اگسٹ ، ( سیاست نیوز) مرکزی حکومت کی جانب سے حج کیمپ کے دوران سیکورٹی انتظامات کے سلسلہ میں خصوصی ہدایات کے بعد حج ہاوز نامپلی کے اندرونی اور بیرونی حصہ میں زائد سیکورٹی عملے کو تعینات کیا گیا ہے۔ حج ہاوز کے کھلے حصے میں موجود دو چھوٹے گیٹس کو پولیس کی ہدایت پر سیل کردیا گیا۔ سیکورٹی حکام نے حالیہ عرصہ میں حج ہاوز کا دورہ کرتے ہوئے سیکورٹی خامیوں کی نشاندہی کی تھی۔ حج ہاوز کے اندرونی اور بیرونی حصہ میں لاء اینڈ آرڈر کے 150 عہدیداروں اور جوانوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ٹریفک پولیس کے 80 ملازمین کی خدمات فراہم کی گئی ہیں۔ سٹی سیکورٹی ونگ اور بم اسکواڈ کے عملے کے علاوہ 28 ہوم گارڈز بھی حج کیمپ کیلئے تعینات کئے گئے۔ باب الداخلہ پر مٹیل ڈیٹکٹرس لگائے گئے ہیں جن سے ہر وزیٹر کی تلاشی لی جارہی ہے۔ بم ڈسپوزل اسکواڈ وقفہ وقفہ سے عمارت کی تلاشی لے رہا ہے۔ جاریہ سال حج ہاوز میں داخلہ کیلئے پاسیس کی تعداد میں کمی کی گئی اور سختی کے ساتھ اس پر عمل کیا جارہا ہے۔ دیگر محکمہ جات کے عہدیدار اور ملازمین بھی اپنے شناختی کارڈز کے ساتھ دیکھے گئے ہیں۔ جاریہ سال وزارت اقلیتی امور نے ملک کے موجودہ حالات کے پیش نظر چوکسی کی ہدایت دی تھی۔ اسی دوران آج برقی کی سربراہی کے سلسلہ میں ناقص انتظامات دیکھے گئے اور ایک مرحلہ پر سکریٹری اقلیتی بہبود کی موجود گی میں لفٹ ناکارہ ہوگئی۔ سکریٹری نے مینٹننس کے عملہ پر برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ 24 گھنٹے مینٹننس کا عملہ لفٹس کی نگرانی کیلئے دستیاب رہنا چاہیئے ورنہ ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ مقررہ تعداد سے زائد افراد لفٹ میں سوار نہ ہوں۔ برقی کی سربراہی میں تعطل کی اہم وجہ قدیم کیبل وائر کا گل جانا ہے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ منان فاروقی نے کل رات دیر گئے تک حج ہاوز میں قیام کرتے ہوئے کیبل کی تبدیلی کے کام کی نگرانی کی۔ اسی دوران حج ہاوز کے احاطہ میں موجود تینوں ہورڈنگس حج کمیٹی کو الاٹ کئے گئے جن پر تلگو، اردو اور انگریزی میں حکومت کی جانب سے استقبالیہ نوٹ تحریر کیا گیا۔ ہورڈنگس پر چیف منسٹر، ڈپٹی چیف منسٹر اور صدرنشین وقف بورڈ کی تصاویر شامل کی گئیں۔ بتایا جاتا ہے کہ ہورڈنگس پر بعض دیگر اقلیتی اداروں نے بھی دعویداری پیش کی تھی۔ حج ہاوز کی خیرمقدمی کمان پر کسی بھی قائد کی تصویر آویزاں نہیں کی گئی ہے۔ حج ہاوز کے باہر اور بیرونی حصہ میں مختلف ٹی آر ایس قائدین کی جانب سے عازمین حج کے استقبال کے پوسٹرس اور فلیکسی لگائے گئے۔

TOPPOPULARRECENT