Friday , January 19 2018
Home / جرائم و حادثات / حج ہاؤز کے قریب برقی تارگرنے سے 4افراد فوت‘ 2زخمی

حج ہاؤز کے قریب برقی تارگرنے سے 4افراد فوت‘ 2زخمی

حیدرآباد۔15ستمبر ( سیاست نیوز) نامپلی حج ہاؤز کے قریب پیش آئے ہولناک برقی شارٹ سرکٹ حادثہ میں چار افراد فوت اور دیگر دو جھلس کر شدید زخمی ہوگئے ۔اس واقعہ کے بعد حج ہاؤز میں خوف کا ماحول پیدا ہوگیا اور حج ہاؤز میں آہ و بکاہ کی آوازیں گونجنے لگی اور دیکھتے ہی دیکھتے بھگدڑ مچ گئی ۔ اگرچہ اس المناک واقعہ میں تمام عازمین اور دیگر افراد محفوظ رہے ‘ تاہم مدھیہ پردیش سے تعلق رکھنے والے مزدور پیشہ افراد نشانہ بنے ۔ یہ سانحہ عین اس وقت پیش آیا جب عازمین حج کے قافلہ کی ایک بس مین گیٹ پہنچ گئی تھی اور برقی تار گرنے کا واقعہ مین گیٹ کے بائیں جانب ایک ٹی اسٹال کے قریب پیش آیا ۔ شہر میں ہوئی موسلادھار بارش کے سبب جیسے ہی برقی تار ٹوٹ کر زمین پر گرپڑا وہاں جمع شدہ برساتی پانی میں برقی رو دوڑ گئی اور افراد اس کی زد میں آگئے ۔ اس واقعہ کے فوری بعد حج ہاؤز کی عمارت میں برقی سربراہی کو بند کردیا گیا اور والینٹرس نے زخمیوں کو قریب واقع میڈوین ہاسپٹل منتقل کیا جہاں ڈاکٹروں نے چار زخمیوں کو مردہ قرار دیا جن کی شناخت رمیش ‘ کومل ‘ رنگیش اور سشیل یادو کی حیثیت سے کی گئی ‘ جو مدھیہ پردیش سے تعلق رکھتے تھے اور مزدور بتائے گئے ہیں ۔ حادثہ کے بعد عازمین حج میں پائے جانے والے خوف و ہراس کو دورکرنے کی کوشش کرتے ہوئے حج کمیٹی کے ذمہ داران نے میڈوین ہاسپٹل کا دورہ کیا اور وہاں زخمیوں کے تعلق سے تفصیلات حاصل کرنے کے بعد حج ہاؤز کا رُخ کیا ۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی مسٹر ایس اے شکور نے عازمین حج اور ان کے رشتہ داروں کو بتایا کہ ہلاک اور زخمی افراد میں کوئی عازمین حج نہیں ہے اور نہ ہی کسی کا تعلق ان کے رشتہ داروں میں سے ہے ۔ تاہم حج کمیٹی ایسے کسی بھی واقعہ کی روک تھام کیلئے مکمل انتظامات انجام دے گی ۔ انہوں نے عازمین اور ان کے رشتہ داروں کو حج کمیٹی کے حفاظتی انتظامات کا بھروسہ دلایا ۔ یہ اطلاع شہر میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور سوشل نیٹ ورکنگ سائیٹ پر اموات کے تعلق سے اطلاعات شہریوں میں بے چینی کا سبب بنی رہی ‘ اطلاع پاکر ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ محمود علی اور آندھراپردیش کے وزیر اقلیتی بہبود پلے رگھوناتھ ریڈی حج ہاؤز پہنچ گئے اور اپنے اپنے علاقہ کے عازمین حج سے ملاقات کی اور حفاظتی انتظامات اور اقدامات کے تعلق سے انہیں بھروسہ دلایا ۔ بتایا جاتا ہیکہ ہلاک افراد کا تعلق ریاست مدھیہ پردیش سے ہے جو حج ہاؤز سے متصل بس اسٹاپ کے قریب واقع ٹی اسٹال کے بازو ٹھہرے ہوئے تھے ۔حادثہ سے تقریباً دو گھنٹے قبل تلنگانہ ریاست کے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے عازمین کے قافلہ کو جھنڈی دکھائی تھی ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے زخمی افراد کے علاج کو سرکاری طور پر برداشت کرنے کا تیقن دیا اور حادثہ پر اپنے شدید رنج و غم کا اظہار کیا اور حج ہاؤز میں عازمین سے شخصی ملاقات کی اور خیر کیلئے دعائیں کرنے کی ان سے گذارش کی ۔ حج ہاؤز کے قریب پیش آئے اس حادثہ کی اطلاع کے ساتھ ہی سابق وزیر اقلیتی بہبود کانگریس کے سینئر قائد محمد علی شبیر حج ہاؤز پہنچ گئے اور حادثہ پر افسوس کا اظہار کیا ۔ انہوں نے حج میں انتظامات کے تعلق سے آگہی حاصل کی ۔ اطلاعات کے مطابق چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ اور ریاستی وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی سے تفصیلات حاصل کی اور چیف منسٹر نے اس واقعہ پر افسوس کا اظہارکیا ۔اس موقع پر اسپیشل آفیسر وقف بورڈ مسٹر جلال الدین اکبر ‘ ایگزیکٹیو آفیسر ایم اے حمید کے علاوہ تلنگانہ راشٹرا سمیتی قائدین ارشد علی خان اور حیدر علی خان کے علاوہ دیگر موجود تھے ۔ ذرائع کے مطابق 3افراد میڈوین اور ایک شخص عثمانیہ جنرل ہاسپٹل میں فوت ہوگیا جبکہ دیگر دو زخمیوں کا علاج جاری ہے ۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر آف پولیس سنٹرل زون مسٹر کملاسن ریڈی نے بتایا کہ اس واقعہ کے خلاف پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے ۔ انہوں نے چار اموات اور ایک زخمی شخص کی توثیق کردی اور بتایا کہ پولیس اس واقعہ کی تحقیقات کرے گی ۔

TOPPOPULARRECENT