Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / حج ہاوز سے متصل اراضی پر اقلیتی بہبود کے دفاتر کی منتقلی کی تجویز

حج ہاوز سے متصل اراضی پر اقلیتی بہبود کے دفاتر کی منتقلی کی تجویز

ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کا آج دورہ عمارات حج ہاوز
حیدرآباد۔ 24نومبر (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کل 25 نومبر کو 3 بجے سہ پہر حج ہائوز کے زیر تعمیر کامپلکس کا دورہ کریں گے۔ حج ہائوز سے متصل اس 7 منزلہ کامپلکس میں اقلیتی بہبود کے دفاتر منتقل کرنے کی تجویز ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے اسمبلی میں اعلان کیا تھا کہ اقلیتی بہبود کے تحت شہر میں موجود تمام دفاتر اس کامپلکس میں منتقل کیے جائیں گے اور حج ہائوز کی عمارت کو حج کیمپ کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ حالیہ اعلی سطحی جائزہ اجلاس میں چیف منسٹر نے ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی کو مسلم ارکان مقننہ کے ساتھ کامپلکس کا دورہ کرنے کی ہدایت دی تھی۔ دورے کے موقع پر کامپلکس کے تعمیری کاموں کی عاجلانہ تکمیل اور دفاتر کی منتقلی کے منصوبے کو قطعیت دی جائے گی۔ حکومت کے اس فیصلے کے بعد وقف بورڈ کو کامپلکس لیز پر دینے کے فیصلے سے دستبرداری اختیار کرنی پڑی۔ وقف بورڈ نے 30 سالہ لیز کے لیے ٹینڈر اعلامیہ جاری کیا تھا۔ 3,600 مربع گز اس کامپلکس کے دو سیلرس ہیں۔ ٹینڈرس 14 اکٹوبر تا 15 نومبر داخل کرنے کی گنجائش تھی تاہم بتایا جاتا ہے کہ کسی بھی کمپنی نے اس کامپلکس کو لیز پر لینے میں دلچسپی ظاہر نہیں کی اور ایک بھی درخواست فروخت نہیں کی گئی۔ اسی دوران وقف بورڈ ای ٹینڈرس طلب کرنے کی تیاری کررہا تھا کہ اچانک چیف منسٹر نے لیز کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے اقلیتی بہبود کے دفاتر منتقل کرنے کی ہدایت دی۔ ایک ہی کامپلکس میں اقلیتی بہبود کے تمام دفاتر کی منتقلی سے اقلیتوں کو سہولت کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT