Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / حج ہاوز سے متصل کمرشیل کامپلکس کو بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کی چیف منسٹر سے بہت جلد منظوری

حج ہاوز سے متصل کمرشیل کامپلکس کو بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کی چیف منسٹر سے بہت جلد منظوری

حیدرآباد۔ 17 ۔ ستمبر (سیاست نیوز) حج ہاؤز نامپلی سے متصل 7 منزلہ کمرشیل کامپلکس کیلئے حکومت نے بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کا اعلان کیا ہے۔ اس سے وقف بورڈ کو تقریباً 4 کروڑ 7 لاکھ روپئے کی بچت ہوگی۔ کامپلکس کی تعمیر کی تکمیل کے بعد یہ وقف بورڈ کی جانب سے تعمیر کردہ پہلا عصری کمرشیل کامپلکس ہوگا جس سے وقف بورڈ کی آمدنی میں خاطر خواہ اضافہ ہوسکت

حیدرآباد۔ 17 ۔ ستمبر (سیاست نیوز) حج ہاؤز نامپلی سے متصل 7 منزلہ کمرشیل کامپلکس کیلئے حکومت نے بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کا اعلان کیا ہے۔ اس سے وقف بورڈ کو تقریباً 4 کروڑ 7 لاکھ روپئے کی بچت ہوگی۔ کامپلکس کی تعمیر کی تکمیل کے بعد یہ وقف بورڈ کی جانب سے تعمیر کردہ پہلا عصری کمرشیل کامپلکس ہوگا جس سے وقف بورڈ کی آمدنی میں خاطر خواہ اضافہ ہوسکتا ہے۔ واضح رہے کہ وقف بورڈ نے متصل اراضی پر 7 منزلہ عصری کامپلکس کی تعمیر کا فیصلہ کیا اور اس کے لئے مختلف اوقافی اداروں کی جملہ 11 کروڑ روپئے رقم ابھی تک خرچ کی گئی۔ کامپلکس کے 7 فلور مکمل ہوچکے ہیں۔ تاہم اندرونی کام ابھی باقی ہے۔ اسی دوران گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے وقف بورڈ کو نوٹس دی کہ بلڈنگ فیس کے طور پر 4.6 کروڑ روپئے ادا کئے جائیں۔ وقف بورڈ فنڈس اور وسائل کی کمی کے باعث اس موقف میں نہیں ہے کہ اس قدر بھاری رقم ادا کرسکے۔ لہذا تعمیری کام کو روکنا پڑا۔ اسپیشل آفیسر وقف بورڈ جناب محمد جلال الدین اکبر نے کامپلکس کی تعمیر کی تکمیل کو یقینی بنانے کیلئے بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کے سلسلہ میں حکومت سے نمائندگی کی۔ مختلف سطح پر حکومت سے نمائندگی کا مثبت نتیجہ برآمد ہوا اور چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے عازمین حج کے قافلہ کی روانگی کے موقع پر بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کا اعلان کیا ۔

انہوں نے محکمہ اقلیتی بہبود، بلدی نظم و نسق اور گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کو ہدایت دی کہ ضروری امور کی جلد تکمیل کریں تاکہ کامپلکس کی تعمیر مکمل ہوسکے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کے اعلان کے بعد متعلقہ فائل چیف منسٹر کے دفتر کو روانہ کی گئی ہے ، اس کے علاوہ بلدی نظم و نسق اور گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کو بھی چیف منسٹر کے اس تیقن کی اطلاع دی گئی ۔ محکمہ اقلیتی بہبود کے سکریٹری جناب احمد ندیم بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کے حصول کیلئے متعلقہ محکمہ جات سے ربط میں ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کے دفتر سے جلد ہی متعلقہ فائل کو منظوری حاصل ہوجائے گی، جس کے بعد سرکاری سطح پر احکامات جاری کئے جائیں گے۔ کمرشیل کامپلکس کی تعمیر سے وقف بورڈ کی سالانہ آمدنی میں زبردست اضافہ ہوگا ۔ بتایا جاتا ہے کہ درگاہ حضرت اسحاق مدنیؒ وشاکھاپٹنم اور دیگر بڑے اوقافی اداروں کے فنڈ کو تعمیر میں استعمال کیا گیا۔ اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کامپلکس کی عاجلانہ تکمیل میں خصوصی دلچسپی رکھتے ہیں۔ نئے قواعد کے مطابق خانگی اداروں کو کامپلکس کی تعمیر کے بعد 30 سال کے لئے لیز پر دیا جاسکتا ہے۔ حکومت کی جانب سے بلڈنگ فیس سے استثنیٰ کے حصول کے ساتھ ہی وقف بورڈ مابقی کاموں کی تکمیل کیلئے ٹنڈرس طلب کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT