Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / حج 2015ء کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز‘ درخواست فارمس کی اجرائی

حج 2015ء کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز‘ درخواست فارمس کی اجرائی

حیدرآباد۔ 19 جنوری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی نے حج 2015ء کے درخواست فارمس جاری کرتے ہوئے حج کمیٹی کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز کردیا۔ حج ہاؤز نامپلی میں منعقدہ تقریب میں جناب محمود علی نے عازمین حج کو حج فارمس جاری کئے اور تلنگانہ حکومت کی جانب سے عازمین کی روانگی اور سعودی عرب میں موثر انتظامات کا یقین دلایا۔ انہ

حیدرآباد۔ 19 جنوری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی نے حج 2015ء کے درخواست فارمس جاری کرتے ہوئے حج کمیٹی کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز کردیا۔ حج ہاؤز نامپلی میں منعقدہ تقریب میں جناب محمود علی نے عازمین حج کو حج فارمس جاری کئے اور تلنگانہ حکومت کی جانب سے عازمین کی روانگی اور سعودی عرب میں موثر انتظامات کا یقین دلایا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت جاریہ سال مکہ معظمہ میں حیدرآبادی رباط میں تلنگانہ کے عازمین کے قیام کو یقینی بنائے گی۔ اس سلسلے میں ناظر رباط اور اوقاف کمیٹی نظام ٹرسٹ سے مشاورت کے ذریعہ 600 عازمین حج کے قیام کے انتظامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ناظر رباط نے ان کے دورہ سعودی عرب کے موقع پر تیقن دیا تھا کہ 600 عازمین کے قیام کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ جناب محمود علی نے کہا کہ رباط کے مسئلہ کی جلد ہی یکسوئی کرلی جائے گی۔ گزشتہ 2 سال سے تلنگانہ کے عازمین حج رباط میں قیام کی سہولت سے محروم رہے۔ وہ اس بات کی کوشش کریں گے کہ سعودی عرب میں قیام کے دوران عازمین حج بہتر سے بہتر سہولتیں فراہم ہوسکیں۔ انہوں نے بتایا کہ اسپیشل سیکریٹری اقلیتی بہبود جناب سید عمر جلیل کی قیادت میں ایک ٹیم سعودی عرب روانہ کی جائے گی جو تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے عازمین کے لئے بہتر رہائش گاہوں کا انتظام کرے گی۔ گزشتہ سال رہائش گاہوں کے انتخاب کے سلسلے میں آندھرا پردیش سے نمائندہ کو شامل نہیں کیا گیا تھا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ حکومت جاریہ سال مزید بہتر انتظامات کے حق میں ہے اور فنڈس کی فراہمی کوئی مسئلہ نہیں رہے گی۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ عازمین حج کی بہتر سے بہتر خدمت کیلئے ضروری فنڈس جاری کرنے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حج بیت اللہ کی سعادت یقینا ہر مسلمان کیلئے خوش قسمتی کا باعث ہے اور جو افراد حج فارم کے حصول کے لئے آئے ہیں، وہ توقع کرتے ہیں کہ ان میں زیادہ سے زیادہ کو قرعہ اندازی کے ذریعہ حج کی سعادت حاصل ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ عازمین حج کی خدمت کرنے والوں کو اللہ تعالیٰ حج کے برابر ثواب عطا کرتا ہے اور حکومت اسی نظریہ کے تحت بہتر سے بہتر انتظامات کرے گی۔ جناب محمود علی نے کہا کہ تلنگانہ حکومت اقلیتوں کی تعلیمی اور معاشی ترقی کے سلسلے میں سنجیدہ ہے اور اقلیتی نوجوانوں کو دیگر اقوام کے شانہ بشانہ ترقی کے میدان میں کھڑا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے عازمین حج اور ان کے حج کی قبولیت کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔ درخواست فارمس کے حصول کے لئے صبح 9 بجے سے ہی عازمین کی آمد کا سلسلہ شروع ہوچکا تھا، جبکہ فارمس کی تقسیم کا آغاز ایک بجے دن ہوا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے صبح 9 بجے پہونچنے والے پہلے عازم حیدرآباد کے محمد محبوب علی کو پہلا فارم جاری کیا۔ حیدرآباد کے علاوہ تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے تمام اضلاع میں آج سے حج فارمس کی اجرائی کا آغاز ہوچکا ہے۔ سنٹرل حج کمیٹی کی ویب سائیٹ پر آن لائن درخواست فارمس داخل کئے جاسکتے ہیں۔ اسپیشل سیکریٹری اقلیتی بہبود جناب سید عمر جلیل نے عازمین کو مشورہ دیا کہ وہ انتخاب کے سلسلے میں کسی درمیانی افراد کے بہکاوے کا شکار نہ ہوں۔ اس طرح وہ اپنی رقم سے محروم ہوجائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ عازمین کا انتخاب انتہائی شفافیت کے ساتھ قرعہ اندازی کے ذریعہ ہوگا اور کوئی بھی درمیانی شخص یا عہدیدار کسی کا انتخاب نہیں کرسکتا۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ فارمس کے ادخال اور ان کی خانہ پُری کے سلسلے میں عازمین کی سہولت کے لئے 10 خصوصی کاؤنٹرس قائم کریں اور ان پر ماہر کمپیوٹر آپریٹرس کو تعینات کیا جائے۔ جناب جلال الدین اکبر ڈائریکٹر اقلیتی بہبود نے عازمین حج کو فریضہ حج کی نیت پر مبارکباد پیش کی اور یقین دلایا کہ حج کمیٹی تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے عازمین حج کی بہتر سے بہتر خدمت کرے گی۔ انہوں نے عازمین سے کہا کہ کسی بھی مسئلہ کی صورت میں وہ کمیٹی کے عہدیداروں سے رجوع ہوں۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے عازمین حج کو درخواست فارمس کی اجرائی اور روانگی تک کے مراحل کے سلسلے میں مفید مشورے دیئے۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ حج کمیٹی اس مرتبہ آندھرا پردیش کے عازمین کیلئے بھی کیمپ منعقد کرے گی۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں ریاستوں کے عازمین حیدرآباد سے ہی روانہ ہوں گے۔ پروفیسر ایس اے شکور نے کہا کہ اگرچہ حج کمیٹی نے رقم کا تعین نہیں کیا ہے تاہم عازمین کو پہلی قسط کے طور پر 81,000/- روپئے ادا کرنے ہوں گے۔ عازمین کو 1500 ریال فراہم کئے جائیں گے اور 600 ریال کی کٹوتی کی جارہی ہے جس میں قربانی اور مدینہ منورہ میں طعام کے انتظامات کی رقم کے طور پر 600 ریال منہا کئے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ عازمین حج کی رہنمائی کیلئے حج ہاؤز میں خصوصی کاؤنٹر اور خصوصی فون نمبر رکھا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT