Friday , July 20 2018
Home / شہر کی خبریں / حج 2018 ء کے درخواست فارمس کی آج اجرائی

حج 2018 ء کے درخواست فارمس کی آج اجرائی

 

حیدرآباد ۔14۔ نومبر (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی 15 نومبر کو 11.30 بجے دن حج ہاؤز نامپلی میں حج 2018 ء کے درخواست فارمس جاری کریں گے۔ اس تقریب میں حکومت کے مشیر اقلیتی بہبود اے کے خاں ، سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل ، صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم اور عوامی نمائندے شرکت کریں گے۔ اسی دن تمام اضلاع میں حج سوسائٹیوں کی جانب سے درخواست فارمس کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ اسی دوران حج 2018 ء کے ایکشن پلان سے اضلاع کی حج سوسائٹیوں کو واقف کرانے کیلئے تلنگانہ حج کمیٹی نے آج اجلاس منعقد کیا ۔ اسپیشل آفیسر پروفیسر ایس اے شکور نے صدارت کی اور 31 اضلاع کی حج سوسائٹیوں کے عہدیداروں کو حج 2018 ء کے ایکشن پلان سے واقف کرایا۔ انہوںنے کہا کہ 15 نومبر تا 7 ڈسمبر حج درخواست فارم جاری کئے جائیں گے اور اسی مدت میں انہیں داخل کیا جاسکتا ہے ۔ جنوری کے پہلے ہفتہ میں عازمین کی قرعہ اندازی ہوگی۔ حج سوسائٹیوں کو بتایا گیا کہ حکومت نے دو محفوظ زمرہ جات میں سے ایک زمرہ کو ختم کردیا ہے ۔ مسلسل چوتھی مرتبہ درخواست دینے والے عازمین اب محفوظ زمرہ کے تحت شمار نہیں ہوں گے بلکہ ان کا شمار عام زمرہ میں رہے گا اور قرعہ اندازی کے ذریعہ انتخاب عمل میں آئے گا۔ درخواست فارم سنٹرل حج کمیٹی کی ویب سائیٹ سے ڈاؤن لوڈ کئے جا سکتے ہیں۔ شخصی طور پر فارم داخل کرنے کیلئے فارم کی فوٹو کاپی استعمال کی جاسکتی ہے۔ درخواستیں آن لائین داخل کرنے کی سہولت موجود ہے۔ درخواست فارمس صرف ایک صفحہ پر مشتمل ہے اور ایک کور کے تحت 4 بالغ افراد اور دو شیرخوار کے نام درج کئے جا سکتے ہیں۔ پروفیسر ایس اے شکور نے حج خدمات کیلئے ڈسٹرکٹ حج سوسائٹی کی ستائش کی اور کہا کہ عازمین کی رہنمائی کیلئے رضاکارانہ طور پر خدمات انجام دی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حج درخواست کے ساتھ پاسپورٹ کی نقل ، آدھار کارڈ ، راشن کارڈ ، ڈرائیونگ لائسنس کی نقل اور ایک عدد فوٹو داخل کی جائے۔ پاسپورٹ 24 فروری 2019 ء تک کارکرد ہونا چاہئے۔ انہوں نے بتایا کہ 70 سال یا اس سے زائد عمر کے عازمین کیلئے محفوظ زمرہ کی سہولت برقرار ہے۔ 45 سال سے زائد عمر کی 4 خواتین بغیر محرم کے سفر حج کیلئے درخواست داخل کرسکتی ہے۔ بشرطیکہ ان کے مسلک میں اس کی اجازت ہو۔ اس سال عزیزیہ اور گرین زمرہ جات برقرار رہیں گے۔ گرین زمرہ کے عازمین کو پکوان کی اجازت نہیں رہے گی۔

TOPPOPULARRECENT