Tuesday , November 21 2017

حدیث

حضرت انس رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول کریم صلی اﷲ علیہ و آلہٖ و سلم نے فرمایا ’’قیامت اس وقت تک نہیں آئے گی جب تک کہ زمانہ قریب نہ ہوجائے گا ( یعنی زمانہ کی گردش تیز نہ ہوجائے گی اور دن و رات جلد جلد نہ گذرنے لگیں گے اور زمانہ کی تیز رفتاری اس کیفیت و حالت کے ساتھ ہوگی کہ ) سال مہینہ کے برابر ، مہینہ ہفتہ کے برابر ، ہفتہ دن کے برابر ، دن ایک ساعت یعنی ایک گھنٹہ کے برابر ہوجائے گا ، اور ایک گھنٹہ اتنا مختصر ہوجائے گاجیسے آگ کا شعلہ ( گھاس کے تنکے پر) سُلگ جاتا ہے (یعنی جھٹ سے جل کر بجھ جاتا ہے)‘‘۔ (ترمذی)

آخر زمانہ میں دنوں اور ساعتوں میں برکت کم ہوجائے گی ، وقت اس قدر جلد اور تیزی کے ساتھ گذرتا معلوم ہوگا کہ اس کا فائدہ مند اور کارـآمد ہونا معدوم ہوجائے گا یا یہ مراد ہے کہ اس زمانہ میں لوگ تفکرات اور پریشانیوں میں گھرے رہنے اور اپنے دل ودماغ پر بڑے بڑے فتنوں ، نازل ہونے والے مصائب و آفات اور طرح طرح کی مشغولیتوں کا شدید تر دباؤ رکھنے کی جہ سے وقت کے گذرنے کا ادراک و احساس تک نہیں کرپائیں گے ، اور انھیں یہ جاننا مشکل ہوجائے گا کہ کب دن گذرگیا اور کب رات ختم ہوگئی ۔ خطابیؒ نے لکھا ہے کہ حضور نے زمانہ اور وقت کی جس تیز رفتاری کا ذکر فرمایا ہے اس کاظہور حضرت عیسیٰ اور امام مہدی  ؑ کے زمانہ میں ہوگا!

TOPPOPULARRECENT