Thursday , September 20 2018

حدیث

حضرت انس رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے کہ رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’ایسا کوئی نبی نہیں گزرا، جس نے اپنی امت کو چھوٹے کانے (یعنی دجال) سے نہ ڈرایا ہو۔ آگاہ رہو! دجال کانا ہوگا اور تمہارا پروردگار کانا نہیں ہے۔ نیز اس (دجال) کی دونوں آنکھوں کے درمیان ’’ک۔ف۔ر‘‘ (یعنی کفر کا لفظ) لکھا ہوا ہوگا‘‘۔ (بخاری و مسلم)

حضرت انس رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے کہ رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’ایسا کوئی نبی نہیں گزرا، جس نے اپنی امت کو چھوٹے کانے (یعنی دجال) سے نہ ڈرایا ہو۔ آگاہ رہو! دجال کانا ہوگا اور تمہارا پروردگار کانا نہیں ہے۔ نیز اس (دجال) کی دونوں آنکھوں کے درمیان ’’ک۔ف۔ر‘‘ (یعنی کفر کا لفظ) لکھا ہوا ہوگا‘‘۔ (بخاری و مسلم)
اللہ تعالی نے دجال کے ظاہر ہونے کا متعینہ وقت کسی پر بھی ظاہر نہیں فرمایا، بس اس قدر معلوم ہے کہ وہ قیامت سے پہلے ظاہر ہوگا اور چوں کہ قیامت آنے کا متعین وقت کسی کو نہیں معلوم، اس لئے دجال کے ظاہر ہونے کا متعین وقت بھی کسی کو نہیں معلوم۔
’’تمہارا پروردگار کانا نہیں ہے‘‘ یعنی اللہ تعالی اس سے پاک ہے کہ اس کی ذات و صفات میں کوئی عیب و نقص ہو۔ واضح رہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ بات لوگوں کو سمجھانے کے لئے فرمائی ہے، تاکہ ان کی عقل و فہم میں آجائے کہ عبادت و اطاعت اسی ذات کی ہوسکتی ہے، جو اپنی ذات و صفات میں کسی بھی طرح کا کوئی عیب و نقص نہ رکھتا ہو۔
’’ک۔ف۔ر‘‘ سے کفر کا لفظ مراد ہے، چنانچہ مصابیح اور مشکوۃ کے نسخوں میں یہ تینوں حرف اسی طرح علحدہ علحدہ لکھے ہوئے ہیں اور اس سے یہ مفہوم ہوتا ہے کہ گویا دجال کے چہرے پر کفر کا لفظ اسی طرح لکھا ہوگا۔ نیز اس میں اس طرف بھی اشارہ ہے کہ دجال دراصل تباہی و ہلاکت یعنی کفر کی طرف بلانے والا اور کفر کے پھیلنے کا باعث ہوگا، نہ کہ فلاح و نجات کی طرف بلانے والا ہوگا، لہذا اس سے بچنا اور اس کی اطاعت نہ کرنا واجب ہوگا۔ درحقیقت یہ اللہ تعالی کی طرف اس امت کے حق میں ایک بڑی نعمت ہے کہ دجال کی دونوں آنکھوں کے درمیان ’’کفر‘‘ کا لفظ نمایاں ہوگا، جس سے ہر صاحب ایمان کو اس کے مکر و فریب سے بچنے میں آسانی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT