Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / حسین ساگر جھیل کو ماحولیاتی آلودگی سے بچانے حکومت کا منصوبہ

حسین ساگر جھیل کو ماحولیاتی آلودگی سے بچانے حکومت کا منصوبہ

جی ایچ ایم سی حدود میں 25 چھوٹے تالاب کی تعمیر کا فیصلہ ۔ گنیش وسرجن کے متبادل انتظامات
حیدرآباد۔22اگسٹ (سیاست نیوز) حسین ساگر کو ماحولیاتی آلودگی سے بچانے کیلئے حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات میںچھوٹے تالابوں کی تعمیر کو ممکن بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے بلدی حدود میں25 چھوٹے تالاب کی تعمیر کا فیصلہ کیا ہے۔ جی ایچ ایم سی نے فیصلہ کیا ہے کہ اس سال شہر کے اطراف و اکناف کے علاقوں میں چھوٹے تالاب تعمیر کیئے جائیں گے تاکہ گنیش وسرجن کے متبادل انتظامات کئے جا سکیں۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق شہر حیدرآباد میں اور بلدی حدود میں 25چھوٹے تالاب کی تعمیر ممکن بنایا جائے گااور اس سلسلہ میں مقامات کی بھی نشاندہی کی جاچکی ہے اور اندرون 10یوم ان کی تعمیر کو ممکن بنایا جائے گا۔ حسین ساگر تالاب میں بڑھ رہی آلودگی کو روکنے کیلئے حیدرآباد میٹروپولیٹین ڈیولپمنٹ اتھاریٹی اور مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے اعلی عہدیداروں نے جو منصوبہ تیار کیا ہے اس کے مطابق شہر حیدرآباد کے اطراف کے علاقوں مہیشورم‘ کیسرا ‘ کاپرا‘ شیرلنگم پلی‘ الوال ‘ موسی پیٹ ‘ الوال اور دیگر علاقوں میں ان علاقوں کے اطراف کے گنیں وسرجن کے انتظامات کئے جائیں گے۔ سال گذشتہ جی ایچ ایم سی کی جانب سے شہر کے اطراف تجرباتی اساس پر 10چھوٹے عارضی تالاب بنائے گئے تھے تاکہ حسین ساگر میں گنیش وسرجن کو کم کیا جاسکے۔ حسین ساگر سے ماحولیاتی آلودگی کو کم کرنے اور ساگر میں گنیش وسرجن کے سبب پیدا ہونے والی آلودگی کو دور کرنے کیلئے کئے جانے والے اقدامات میں ماحول دوست مورتیوں کی تیاری پر بھی توجہ مرکوز کی جا رہی ہے۔ مئیر مجلس بلدیہ عظیم ترحیدرآباد مسٹر بی رام موہن راؤ نے بتایا کہ ریاستی حکومت بالخصوص ریاستی وزارت بلدی نظم ونسق مسٹر کے ٹی راما راؤ آلودگی سے پاک گنیش تہوار کو ممکن بنانے کے سلسلہ میں خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے جو منصوبہ تیار کیا ہے اس کے مطابق شہریوں میں شعور اجاگر کیا جارہاہے کہ وہ ماحول دوست مورتیوں کے استعمال کو ترجیح دیں اور چھوٹے تالابوں میں نمرجن کو ممکن بنایا جا ئے تاکہ شہر کی خوبصورتی میں اضافہ کرنے والی حسین ساگر جھیل کو صاف و شفاف رکھا جا سکے اور حکومت کی جانب سے حسین ساگر کو خوبصورت بنانے کے منصوبہ میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہونے پائے ۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ جی ایچ ایم سی کی جانب سے گنیش منڈپ آرگنائزرس سے بھی مشاورت کی جا رہی ہے تاکہ انہیں حسین ساگر کو آلودگی سے بچانے کے اقدامات کئے جا سکیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT