Tuesday , January 23 2018
Home / شہر کی خبریں / حسین ساگر جھیل کو مکمل خالی کرکے صفائی کرنے کی تجویز کی مخالفت

حسین ساگر جھیل کو مکمل خالی کرکے صفائی کرنے کی تجویز کی مخالفت

حیدرآباد 17 فبروری ( آئی این این ) شہری جھیلوں کے تحفظ کیلئے سرگرم تنظیم

حیدرآباد 17 فبروری ( آئی این این ) شہری جھیلوں کے تحفظ کیلئے سرگرم تنظیم
SOUL نے حسین ساگر جھیل کو مکمل خالی کرکے صاف کروانے کی تجویز پر چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ کے خلاف ایف آئی آر درج کروانے کا انتباہ دیا ہے ۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے تنظیم کے ارکان پروفیسر پرشوتم ریڈی ‘ جسوین جئے راتھ ‘ پی جی سبا راؤ اور ڈاکٹر لبنی ثروت نے حسین ساگر کو آلودگی سے پاک کرنے کیلئے اس کو پوری طرح خالی کرنے کی مخالفت کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس تجویز پر عمل کیا جاتا ہے تو ہزاروں افراد کو صحت اور زندگیوں کے سنگین خطرات کا سامنا کرنا پڑیگا ۔ اس کی گندگی سے سارا شہر متاثر ہوسکتا ہے ۔ اس جھیل کے آس پاس علاقہ میں رہنے والے افراد تو کینسر سے بھی متاثر ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ حکومت کس طرح سے اس جھیل کے تہہ میں موجود گندگی کو نکالنے کی تجویز رکھتی ہے اور پھر اسے کہاں پھینکا جائیگا ۔ تنظیم کے ارکان نے حکومت کی تجویز کا مضحکہ اڑایا اور کہا کہ اس جھیل کو مکمل خالی کرکے صاف کرنے کے بعد اں میں تازہ اور صاف پانی بھرنا ممکن نہیں ہوگا ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں پہلے ہی پینے کیلئے پانی کی قلت ہے تو ایسی صورتحال میں حکومت اس جھیل کو کس طرح بھریگی ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کو چاہئے کہ وہ ان صنعتوں کو منتقل کرنے یا بند کرنے پر توجہ دیں جن کی وجہ سے حسین ساگر میں آلودگی ہو رہی ہے ۔ انہوں نے حکومت سے کہا کہ وہ حسین ساگر جھیل کو صاف کرنے سپریم کورٹ کی ہدایات پر عمل کرے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکومت اس طرح کی ناقابل عمل تجویز پر عمل کرکے عوامی پیسے کو ضائع کرنا چاہتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT