Saturday , August 18 2018
Home / ہندوستان / حصول اراضیات آرڈیننس کی دوبارہ اجرائی کو سپریم کورٹ میں چیلنج

حصول اراضیات آرڈیننس کی دوبارہ اجرائی کو سپریم کورٹ میں چیلنج

نئی دہلی 10 اپریلٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے آج اس بات سے اتفاق کرلیا کہ کسانوں کی تنظیموں کی درخواست پر پیر کو سماعت کی جائے جس میں نریندر مودی حکومت کی جانب سے حصول اراضیات کے آرڈیننس کی دوبارہ اجرائی کی قانونی حیثیت کو چیلنج کیا گیا ہے ۔ چیف جسٹس ایچ ایل دتو اور جسٹس ارون مشرا پر مشتمل ایک بنچ نے کہا کہ اس درخواست پر پیر کو سماع

نئی دہلی 10 اپریلٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے آج اس بات سے اتفاق کرلیا کہ کسانوں کی تنظیموں کی درخواست پر پیر کو سماعت کی جائے جس میں نریندر مودی حکومت کی جانب سے حصول اراضیات کے آرڈیننس کی دوبارہ اجرائی کی قانونی حیثیت کو چیلنج کیا گیا ہے ۔ چیف جسٹس ایچ ایل دتو اور جسٹس ارون مشرا پر مشتمل ایک بنچ نے کہا کہ اس درخواست پر پیر کو سماعت کی جائیگی ۔ سینئر وکیل اندرا جئے سنگھ نے کسانوں کی تنظیموں کی جانب سے عدالت میں پیش ہوتے ہوئے اس درخواست کی جلد سماعت پر زور دیا ۔

کسان تنطیموں نے اپنی کل پیش کردہ درخواست میں اس آرڈیننس کی دوبارہ اجرائی کو چیلنج کیا ہے اور اسے غیر دستوری قرار دیتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت نے اپنے اختیارات کا رنگا رنگ استعمال کیا ہے اور اس نے قانون ساز اداروں کو نظر انداز کیا ہے ۔ یہ درخواست بھارتیہ کسان یونین ‘ گرام سیوا سمیتی ‘ دہلی گرامین سماج اور چوگما وکاس عوام کی جانب سے پیش کی گئی ہے جس میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ حکومت کو حصول اراضیات بل کے اس آرڈیننس پر کسی طرح کی کارروائی اور عمل سے روک دیا جائے ۔ کسان تنظیموں کا ادعا تھا کہ حکومت کی جانب سے پارلیمنٹ کے قانون سازی کے عمل کو نظر انداز کرتے ہوئے بارہا آرڈیننس جاری کرنا در اصل نہ صرف بہیمانہ اور دستور کی مخالفت ہے بلکہ یہ دستور کے ساتھ خود دھوکہ ہے ۔ ان تنظیموں کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے دوبارہ آرڈیننس کی اجرائی ناپاک عزائم پر مبنی ہے اسی لئے اس اقدام کو چیلنج کیا جا رہا ہے ۔ اس درخواست میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے حصول اراضیات بل کی لوک سبھا میں منظوری کے بعد 10 تا 20 مارچ اس بل کو راجیہ سبھا میں مباحث کیلئے عمدا پیش نہیں کیا کیونکہ اس کے پاس ایوان میں درکار ارکان کی تائید نہیں ہے ۔ ان تنظیموں نے کہا کہ اس بل پر سیاسی اتفاق رائے بھی نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT