حصول اراضیات کیلئے آرڈیننس کیخلاف پارلیمنٹ میں احتجاج کا اعلان

اندرا پارک پر رکن راجیہ سبھا کانگریس وی ہنمنت راؤ کا احتجاجی دھرنا و خطاب، دیگر قائدین کا اظہاریگانگت

اندرا پارک پر رکن راجیہ سبھا کانگریس وی ہنمنت راؤ کا احتجاجی دھرنا و خطاب، دیگر قائدین کا اظہاریگانگت
حیدرآباد ۔ 21 فبروری (سیاست نیوز) سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ کی جانب سے حصول اراضیات کیلئے مرکزی حکومت کی جانب سے جاری کردہ آرڈیننس کے خلاف آج اندرا پارک پر اہتمام کردہ ایک روزہ احتجاجی دھرنے سے کانگریس کے قائدین نے اظہاریگانگت کیا۔ دھرنے کا آغاز کرتے ہوئے مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ کارپوریٹ سیکٹرس کی تائید سے وزیراعظم بننے والے وزیراعظم مسٹر نریندر مودی غریب عوام اور کسانوں کے مفادات کو نقصان پہنچاتے ہوئے صرف اور صرف کارپوریٹ سیکٹرس کو فائدہ پہنچانے کیلئے آرڈیننس جاری کیا ہے جس کی کانگریس پارٹی سخت مخالفت کرتی ہے اور اس آرڈیننس کے خلاف پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں کانگریس پارٹی کسانوں کا موقف پیش کرتے ہوئے احتجاج کرے گی اور بل کو ہرگز منظور ہونے نہیں دے گی۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا نے کسانوں کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے کانگریس کے سینئر قائد مسٹر وی ہنمنت راؤ کی جانب سے منظم کردہ احتجاج کی بھرپور تائید کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس غریب اور کسانوں کے مفادات کا تحفظ کرنے والی جماعت ہے۔ اسپیشل اکنامک زونس قائم کرتے وقت حصول اراضیات کیلئے کانگریس کی زیرقیادت یو پی اے حکومت نے جو قانون سازی کی تھی وہ سب کیلئے قابل قبول تھا۔ سونیا گاندھی نے گاؤں کے 80 فیصد عوام کی پسند کو ترجیح دیتے ہوئے اراضی حاصل کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور مارکٹ قدر سے دوگنی قیمت ادا کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ تاہم این ڈی اے حکومت کی جانب سے جاری کردہ آرڈیننس خطرناک ہے جس میں عوام کی مرضی کے خلاف اراضی حاصل کرنے کی گنجائش فراہم کی گئی ہے۔ قائد اپوزیشن مسٹر کے جاناریڈی نے کہا کہ غریبوں کے مفادات کو نظرانداز کرنے والی حکومتوں کو عوام کبھی برداشت نہیں کریں گے۔ ترقی کے نعرے پر اقتدار حاصل کرنے کے بعد وزیراعظم غریب عوام کی ترقی کو نظرانداز کرتے ہوئے صرف کارپوریٹ سیکٹرس کی ترقی کو ترجیح دے رہے ہیں۔ غریب عوام کے اچھے دن تو نہیں رہے ہاں البتہ بی جے پی کے اچھے دن ضرور آئے ہیں۔ قائد اپوزیشن کونسل مسٹر ڈی سرینواس نے مرکز کی جانب سے جاری کردہ آرڈیننس کو جلد بازی میں کیا گیا فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ 23 فبروری سے پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن کا آغاز ہورہا ہے۔ اس پارلیمنٹ میں بل متعارف کرنے سے قبل آرڈیننس جاری کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے یہ بتادیا کہ انہیں غریب عوام کے مفادات سے زیادہ تاجرین اور کارپوریٹ سیکٹرس کے مفادات عزیز ہیں۔

TOPPOPULARRECENT