Thursday , November 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / حصول تحفظات کیلئے بی سی کمیشن کا قیام ناگزیر

حصول تحفظات کیلئے بی سی کمیشن کا قیام ناگزیر

وعدہ کی تکمیل کیلئے چیف منسٹر سے مسلمانوں کا مطالبہ
آرمور ۔/20مارچ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاست تلنگانہ کی علحدگی کے بعد تلنگانہ ریاست کے اسمبلی انتخابات عمل میں لائے گئے اور عوام نے کے سی آر کی تلنگانہ کیلئے جدوجہد اور بہترین ٹی آر ایس کے انتخابی منشور کو دیکھتے ہوئے جس میں مسلم مائناریٹی ودیگر مائناریٹیز کیلئے 12فیصد تحفظات دینے کا تیقن اور بیڑی مزدوروں کو وظیفہ اور مختلف وظائف کو 200سے بڑھاکر 1000 روپئے اور 500 سے بڑھاکر 1500 روپئے کرنے کے وعدہ کو دیکھتے ہوئے تلنگانہ کی عوام نے ٹی آر ایس کو اقتدار دیا لیکن تلنگانہ کے مسلم مائنارٹیز و دیگر 12فیصد تحفظات کیلئے احتجاج پر اُتر آئے ہیں کیونکہ ان سے جو وعدہ کیا گیا تھا اقتدار پر آنے اندرون چھ ماہ 12فیصد تحفظات عمل میں لائے جائیں گے۔ یہاں کی مسلم مائناریٹیز کا کہنا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں مختلف جائیدادوں کیلئے اعلامیہ جاری کئے جاچکے ہیں اور 12فیصد تحفظآت نہ دینے کی وجہ سے مسلمان کئی ہزار جائیدادوں اور نوکریوں سے محروم کئے جارہے ہیں۔ مسلم عوام کا کہنا ہے کہ تلنگانہ ریاستی حکومت کو چاہیئے کہ وہ بی سی کمیشن کے ذریعہ مسلمانوں کو تحفظات کی راہ ہموار کرے تاکہ قانونی پیچیدگیاں حائل نہ ہوسکے اور دیگر کمیٹیوں کے ذریعہ وقت کو ضائع نہ کریں کیونکہ مسلمانوں کے معاشی حالات پر سابقہ رپورٹس موجود ہیں۔ انہوں نے کے سی آر سے مطالبہ کیا کہ جلد بی سی کمیشن قائم کرتے ہوئے تحفظات کی راہ ہموار کریں اور بتایا کہ کئی مسلم و دیگر خواتین مستحق ہونے کے باوجود بیڑی و دیگر وظائف سے محروم کئے جارہے ہیں۔ مستحق افراد کو وظائف دینے کا مطالبہ کیا گیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT