Monday , December 11 2017
Home / اضلاع کی خبریں / حصول تحفظات کیلئے متحدہ جدوجہد ضروری

حصول تحفظات کیلئے متحدہ جدوجہد ضروری

نارائن پیٹ میں مسلم ریزرویشن جے اے سی کا اجلاس ، مختلف قائدین کا خطاب
نارائن پیٹ /17 ستمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) سماجی انصاف کیلئے مسلم اقلیت کو 12 فیصد تحفظات دئے جائیں ۔ جناب محمد حنیف ریاستی قائد تلنگانہ مسلم ریزرویشن جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے نارائن پیٹ میں مسلمان اور تحفظات کے موضوع پر منعقدہ گول میزکانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ کانفرنس کی صدارت سید غیاث الدین شاہ قادری سجادہ نشین درگاہ حضرت سید شاہ محمد تقی قادری نے کی ۔ محمد نواز موسی نے کہا کہ تمام مسلمان آپسی اتحاد و اتفاق کے ذریعہ حکومت تلنگانہ سے 12 فیصد تحفظات کے حصول کیلئے جوکہ ہمارا حق ہے حکومت پر دباؤ پیدا کریں کیونکہ ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ نے 12 فیصد تحفظات کا اپنے انتخابی منشور میں وعدہ کیا تھا ۔ جناب عبدالسلیم ایڈوکیٹ نے کہاکہ تلنگانہ کے حصول کیلئے تمام طبقات نے مساوی کوشش کی ہے ۔ مسلمانوں کی تعلیمی اور معاشی پسماندگی کو دور کرنے کیلئے تحفظات ضروری ہیں ۔ ممتاز مصنف روف حسام الدین نے کہا کہ ہمارا ملک ایک سیکولر مملکت ہے ۔ مسلمان آزادی کے 60 سال گذرنے کے  بعد بھی پسماندگی کا شکار رہے ہیں اور سرکاری مراعات سے محروم ہیں جبکہ مراعت کا وعدہ ہندوستان کے عظیم دستور نے کیا ہے ۔ سرکاری مراعات سے محرومی کے سبب آج یہ قوم پچھڑی ہوئی قوم میں بدل گئی ہے ۔ سماجی انصاف کیلئے مسلمانوں کو تحفظات دئے جائیں ۔ محمد راشد فیصل قائد ایس آئی او نے کہا کہ کسی بھی تحریک کی کامیابی کیلئے خلوص ضروری ہے جو تحرکیں خلوص اور سچائی کے ساتھ آگے بڑھتی ہیں وہ کامیاب ہوتی ہیں ۔ محمد امیرالدین ایڈوکیٹ صدر الفلاح ایجوکیشنل سوسائٹی نے کہا کہ ریزرویشن کی جلد از جلد عمل آوری کیلئے ایک سٹنگ جج کی نگرانی میں کمیشن کا قیام عمل می ںلایا جائے تاکہ تحفظات پر عمل آوری یقینی ہوسکے ۔ محمد ظہیرالدین اور عبدالرحمن ٹی آر ایس قائدین نے کہا کہ اس ضمن میں چیف منسٹر تلنگانہ سے نمائندگی کی جائے گی ۔ اس گول میز کانفرنس سے محبوب نگر کے قائدین رفیق پٹیل ( صحافی ) سید نورالحق ، مظہر شہید ( مسلم لیگ ) غلام محی الدین چاند ( صدر مجلس نارائن پیٹ ) محسن پاشاہ قادری ( محبوب نگر ) نے بھی مخاطب کیا ۔ اس کانفرنس میں معززین شہر محمد غوث انجینئیر ، محمد تاج الدین ، نصیرالدین چاند ، محمد تقی ، حافظ محمد تقی بھی موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT