Monday , September 24 2018
Home / مذہبی صفحہ / حضرت سید شاہ قدرت اللہ قادری علیہ الرحمہ

حضرت سید شاہ قدرت اللہ قادری علیہ الرحمہ

حضرت سید شاہ قدرت اللہ قادری رحمۃ اللہ علیہ دہلی سے دکن تشریف لائے۔ آپ کے والد ماجد کا نام حضرت سید شاہ ید اللہ قادری رحمۃ اللہ علیہ تھا اور اپنے عم محترم حضرت سید شاہ ظہیر الدین قادری رحمۃ اللہ علیہ سے سلسلہ قادریہ اور حضرت نور الدین چشتی فاروقی رحمۃ اللہ علیہ سے سلسلہ چشتیہ کی خلافت حاصل کی۔ آپ نے بنت عم سے نکاح کیا اور کرنول کو اپن

حضرت سید شاہ قدرت اللہ قادری رحمۃ اللہ علیہ دہلی سے دکن تشریف لائے۔ آپ کے والد ماجد کا نام حضرت سید شاہ ید اللہ قادری رحمۃ اللہ علیہ تھا اور اپنے عم محترم حضرت سید شاہ ظہیر الدین قادری رحمۃ اللہ علیہ سے سلسلہ قادریہ اور حضرت نور الدین چشتی فاروقی رحمۃ اللہ علیہ سے سلسلہ چشتیہ کی خلافت حاصل کی۔ آپ نے بنت عم سے نکاح کیا اور کرنول کو اپنا مستقر بنایا۔
آپ کا گھرانہ صوفیوں کا مسکن اور عاشقوں کا مظہر تھا۔ آپ نے کرنول میں اس وقت قیام فرمایا، جب وہاں کا ماحول مکدر تھا۔ جس وقت آپ تشریف لائے خاندان نوابین نے آپ کی عزت و تکریم کی اور آپ کو مال و دولت کی پیشکش کی، جس کو آپ نے بلاتردد مسترد کردیا اور توکل سے اپنی زندگی کو مربوط کیا، اس طرح آپ نے درویشانہ زندگی کو پسند فرمایا۔
آپ نے کچھ عرصہ قیام کے بعد جب پھر سفر کا قصد کیا تو خاندان نوابین نے آپ کی روانگی کو اپنی کم نصیبی سمجھی اور معروضہ پیش کیا کہ یہیں رہائش پزیر رہیں اور ہم لوگوں کو فیض پہنچاتے رہیں۔ آپ نے فرمایا: ’’ہمارا گھوڑا بحکم خداوندی جس مقام پر ٹھہرے گا، وہی میرا مسکن ہوگا‘‘۔ آپ کا گھوڑا کرنول سے شمال مغرب کی جانب پانچ کیلو میٹر کے فاصلہ پر رُکا، وہیں آپ نے قیام فرمایا اور اسی مقام کو اپنا مسکن بنایا۔
حضرت ممدوح نے اپنے فرزند حضرت فی الحال قادری رحمۃ اللہ علیہ کی اچھی تعلیم و تربیت کی اور انھیں منازل سلوک طے کروایا۔ حضرت فی الحال قادری ابھی چھوٹے ہی تھے کہ والدہ کا انتقال ہو گیا۔ حضرت قدرت اللہ قادری علیہ الرحمہ کا وصال ۱۱۸۰ہجری میں ہوا۔ آپ کا عرس شریف ۴؍ جمادی الثانی کو منایا جاتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT