Saturday , December 15 2018

حضرت شیخ الاسلام کی دینی خدمات ناقابل فراموش

شادنگر /3 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) شیخ الاسلام حضرت انواراللہ فاروقیؒ بانی جامعہ نظامیہ کے علم دین کا فیض ملک ور بیرونی ملک جاری ہے ۔ جامعہ نظامیہ ایک انمول اور منفرد دینی تعلیمی ادارہ ہے ۔ گذشتہ کئی دہوں سے جامعہ نظامیہ سے ہزاروں کی تعداد میں علماء فارغ ہوئے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار مفتی سید صغیر احمد نائب شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ ن

شادنگر /3 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) شیخ الاسلام حضرت انواراللہ فاروقیؒ بانی جامعہ نظامیہ کے علم دین کا فیض ملک ور بیرونی ملک جاری ہے ۔ جامعہ نظامیہ ایک انمول اور منفرد دینی تعلیمی ادارہ ہے ۔ گذشتہ کئی دہوں سے جامعہ نظامیہ سے ہزاروں کی تعداد میں علماء فارغ ہوئے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار مفتی سید صغیر احمد نائب شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ نے شادنگر میں ممتاز فنکشن ہال میں منعقدہ جلسہ حضرت شیخ الاسلام کانفرنس بضمن صد سالہ عرس شریف کے موقع پر مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ حضرت انواراللہ فاروقیؒ بانی جامعہ نظامیہ سچے عاشق رسول تھے ۔ علم دین کو عام کرنے کے اہم مقصد کو پورا کرنے کیلئے دکن کا رخ کیا اور دکن میں ہجرت دینی درسگاہ کا قیام عمل میں لاتے ہوئے دینی علم کی روشنی کو پھیلانا شروع کیا ۔ دینی درسگاہ سے لاکھوں کی تعداد میں علماء فیض یاب ہوئے اور دین علم کی روشنی ملک اور بیرونی ملک کے کونے کونے میں فارغین جامعہ خاموش انداز میں پھیلا رہے ہیں ۔ جامعہ نظامیہ قدیم اور مشہور و معروف درسگاہ ہے ۔ جامعہ کے تحت ملک اور بیرونی ملک کئی ایک درسگاہیں چل رہے ہیں ۔ بانی جامعہ نظامیہ شیخ الاسلام دینی علمی خدمات ناقابل فراموش ہیں ۔ اسلامی تعلیمات کو عام کرنے کیلئے بانی جامعہ نے کوئی بھی موقع نہیں چھورا اور دائرہ المعارف کا قیام عمل میں لایا ۔ اس کے علاوہ نکاح کے متعلق سیاہ ناموں کی اشاعت کی ۔ نکاح کے متعلق تمام تر تفصیلات سیاہ جات میں رکھا ۔ نکاح کے ریکارڈ کو عملی شکل دیتے ہوئے بہترین کارنامہ انجام دیا ۔ علم دین کو حاصل کرنا ہر ایک مسلمان کی ذمہ داری ہے ۔ کلمہ کی بنیاد پر آپس میں اتحاد و اتفاق پیدا کریں ۔ جامعہ نظامیہ کو بند کرنے کے کئی ایک مرتبہ سازشیں رچی گئی لیکن جامعہ کی بنیاد اخلاص کی بنیاد پر صرف اور صرف علم دین کو عام کرنے کیلئے قائم کیا گیا تھا۔ مولانا محمد سلطان کامل جامعہ نظامیہ نے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جامعہ نظامیہ علم دین کا خزانہ ہے ۔ وقت کا تقاضہ ہے کہ ہر مسلمان علم دین سے آراستہ رہے ۔ علم دین انسان کی دنیا اور آخرت دونوں میں کام آئے گا۔ شیخ الاسلام بانی جامعہ نظامیہ نے دکن کا رخ کرتے ہوئے عظیم ا لشان دینی درسگاہ اخلاق اور اچھی نیت کے ساتھ قائم کیا اور یہاں سے آج بھی عالمیت ، فاضلیت کاملین ، مفتیان ،حفاظ کرام فارغ ہوکر علم دین پھیلانے کا کام کر رہے ہیں ۔ مولانا محمد قدیر کامل جامعہ نظامیہ نے شیخ الاسلام بانی جامعہ کے علمی کارناموں پر تفصیلی روشنی ڈالی ۔ حافظ و قاری سید منور علی امام و خطیب مسجد حبیبہ نے جلسہ کی صدارت کی اور آخر میں دعاء کی ۔ حافظ محمد شکیل احمد نقشبندی کامل جامعہ نظامیہ ، حافظ محمد شکیل کامل جامعہ نظامیہ نے جلسہ سے مخاطب کرتے ہوئے بانی جامعہ نظامیہ پر روشنی ڈالی ۔ حافظ اظہر قادری امام و خطیب مسجد فرخنگر کی قرات کلام پاک سے جلسہ کا آغاز ہوا ۔ محمد احتشام ، محمد یعقوب ، محمد شعیب عطاری نے بارگاہ رسالت میں ہدیہ نعت پیش کی ۔ اس موقع پر حافظ محمد عبدالرشید کامل جامعہ نظامیہ امام خطیب مسجد حسینی شادنگر ، حافظ محمد سلیم اور دیگر موجود تھے ۔ حافظ سید اظہر نے سلام پیش کیا ۔ منتظمین جلسہ کی جانب سے مہمانوں کی گلپوشی کی گئی ۔ جلسہ میں مسلمانوں کی کثیر تعداد موجود تھی ۔ مہمان مقررین نے 20 ، 21 اور 22 مارچ کو منعقدہ سہ روزہ عرس تقاریب میں شرکت کی مسلمانوں کو دعوت دی ۔

TOPPOPULARRECENT