Thursday , June 21 2018
Home / اضلاع کی خبریں / حضور نگر کے قریب عید گاہ شہیدکرنے کا واقعہ

حضور نگر کے قریب عید گاہ شہیدکرنے کا واقعہ

مریال گوڑہ۔/15اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حلقہ اسمبلی حضور نگر کے گرڈے پلی منڈل کے موضع گانگہ بنڈہ میں مقامی افراد اور ریونیو عہدیداروں کی ملی بھگت سے عید گاہ کو شہید کردیا گیا۔ تفصیلات کے بموجب کچھ عرصہ سے موضع میں ایک ایکر 20گنٹے اراضی پر موجود مسلمانوں کے قبرستان کی اراضی کو لے کر تنازعہ چل رہا تھا۔ جبکہ قبرستان کی اراضی ریونیو کے

مریال گوڑہ۔/15اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حلقہ اسمبلی حضور نگر کے گرڈے پلی منڈل کے موضع گانگہ بنڈہ میں مقامی افراد اور ریونیو عہدیداروں کی ملی بھگت سے عید گاہ کو شہید کردیا گیا۔ تفصیلات کے بموجب کچھ عرصہ سے موضع میں ایک ایکر 20گنٹے اراضی پر موجود مسلمانوں کے قبرستان کی اراضی کو لے کر تنازعہ چل رہا تھا۔ جبکہ قبرستان کی اراضی ریونیو کے ریکارڈ کے مطابق سروے نمبر 98/6 میں موجود ہے۔ موضع کے کچھ فرقہ پرست و شرپسند عناصر گاؤں کی پرامن فضاء کو بگاڑتے ہوئے قبرستان کی اراضی پر ناجائز طور پر قبضہ کئے ہوئے تھے جس پر گاؤں کے مسلمانوں نے ریونیو اور پولیس عہدیداروں کو بار بار اس مسئلہ پر توجہ دلاتے ہوئے یادداشت پیش کرچکے ہیں۔ لیکن ریونیو اور پولیس نے کبھی بھی اس حساس مسئلہ پر توجہ نہیں دی جس کی وجہ سے 11اکٹوبر کی رات کو قبرستان اور آس پاس میں موجود عیدگاہ کی اراضی پر زعفرانی جھنڈے نصب کرتے ہوئے موضع میں ایک شاندار مندر تعمیر کرنے کا ان فرقہ پرست اور شرپسند افراد کی جانب سے اعلان کیا گیا۔ اس کے باوجود ریونیو اور پولیس کے عہدیداروں نے اس جانب توجہ نہیں دی اور خاموشی اختیار کی۔ آج ان فرقہ پرست اور شرپسند افراد نے تمام موضع کے افراد کے روبرو عیدگاہ کو مسمار کردیا جس کی وجہ سے موضع کے حالات انتہائی کشیدہ ہوگئے۔ جیسے ہی اس کی اطلاع عام ہوئی مریال گوڑہ آر ڈی او کشن راؤ، حضور نگر سرکل انسپکٹر وینکٹیشورلو، تحصیلدار پرمیلا جائے وقوع پہنچ گئے اور

تمام اراضی کو اپنے قبضہ میں لیتے ہوئے 144 سیکشن نافذ کردیا اور مسمار کی گئی عید گاہ اور مسماری میں استعمال کئے گئے اوزار کا معائنہ کیا۔ اس موقع پر آر ڈی او نے کہا کہ اس اراضی کا دوبارہ سروے کیا جائے گا تب تک اس اراضی پر کسی کو بھی آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اراضی پر پولیس کا پہرہ لگادیا گیا۔
٭٭ نلگنڈہ سے سیاست ڈسٹرکٹ نیوز کے بموجب آج صبح دیہی مسلمانوں نے نلگنڈہ پہنچ کر مقامی قائدین سے ملاقات کرتے ہوئے ضلع کلکٹر نلگنڈہ مسٹر ٹی چرنجیولو سے نمائندگی کی۔ ضلع کلکٹر نے عہدیداروں کو فوری کارروائی کرنے کی ہدایت دی۔ لیکن مقامی مسلمانوں کا وفد موضع پہنچنے تک کنٹراکٹر نے دیہی مقامی عوام کے تعاون سے عیدگاہ کو مکمل شہید کردیا اور مسلمانوں کو سخت انتباہ دیا کہ وہ سرکاری کام کاج میں رکاوٹ پیدا کررہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ کچھ دیر مقامی مسلمانوں کو موضع میں داخل ہونے نہیں دیا گیا۔ اس بات کی اطلاع نلگنڈہ مستقر کے قائدین ڈاکٹر محمد حفیظ خاں اور احمد کلیم کو دی جس پر ضلع کلکٹر نلگنڈہ اور ضلع مہتمم پولیس کو دی گئی۔ ایس پی نلگنڈہ نے فوری ڈی ایس پی مریال گوڑہ کو ہدایت دیتے ہوئے موضع کا دورہ کرتے ہوئے حالات کو قابو میں رکھتے ہوئے پولیس پکیٹ قائم کرنے کی ہدایت دی۔

TOPPOPULARRECENT