Thursday , June 21 2018
Home / اضلاع کی خبریں / حفظان صحت اور تعلیم کے فروغ پر اولین توجہ

حفظان صحت اور تعلیم کے فروغ پر اولین توجہ

کریم نگر21 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) عوام کی صحت کی حفاظت اور تعلیم کا فرؤغ میری اولین ترجیح ہوگی ۔ غریبوں کی پریشانیوں کو دور کرنے اور سماجی ترقی کیلئے میں حتی القدور کوشش کروں گا ۔ انسانی خدمت کے جذبہ کے تحت ہی میں نے دواخانہ قائم کرتے ہوئے وہاں بالکل رعایتی فیس پر غریبوں کو معیاری علاج کی سہولت فراہم کی ہے۔ اس طرح اعلی تعلیم کی تر

کریم نگر21 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) عوام کی صحت کی حفاظت اور تعلیم کا فرؤغ میری اولین ترجیح ہوگی ۔ غریبوں کی پریشانیوں کو دور کرنے اور سماجی ترقی کیلئے میں حتی القدور کوشش کروں گا ۔ انسانی خدمت کے جذبہ کے تحت ہی میں نے دواخانہ قائم کرتے ہوئے وہاں بالکل رعایتی فیس پر غریبوں کو معیاری علاج کی سہولت فراہم کی ہے۔ اس طرح اعلی تعلیم کی ترقی کیلئے میڈیکل کالج کا قیام بھی عمل میں لایا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار حلقہ اسمبلی کریم نگر کے کانگریس امیدوار چیلمیڈہ لکشمی نرسمہا راؤ نے سینئیر صحافی و نمائندہ سیاست سید محی الدین سے ایک خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہا ۔ انہوں نے کہا کہ شعبہ سیاست انتہائی منافع بخش تجارت میں تبدیل ہوچکا ہے ۔ انتخابات میں حصہ لینے اور اس میں کامیابیحاصل کرنا کس حد تک مشکل ہے ۔ اس سے سبھی واقف ہیں ۔ آج کل اسمبلی و پارلیمنٹ کسی قسم کے قائدین کو شرکت کا موقع مل رہا ہے ۔ یہ بھی سبھی جانتے ہیں ۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آحر آپ نے سیاست میں آنے کا ارادہ کیوں کیا تو انہوں نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہمارا خاندان تعلیم یافتہ ہے اور پہلے سے ہی سیاست میں ہے ۔ میرے والد چیلمیڈہ آنند راؤ حلقہ کریم نگر کے رکن اسمبلی اور ریاستی وزیر رہ چکے ہیں ۔ وہ ناانصافی کے خلاف تمام تر صرف کردئے تھے ۔ مجھ میں بھی وہی خون اور وہی جذبہ ہے میں نے بھی عوامی خدمات کے جذبہ کے تحت ہی سیاست میں قدم رکھا ہے ۔ گذشتہ انتخابات میں مجھے ناکامی ہوئی لیکن میں نے عوام سے دوری اختیار نہیں کی بلکہ سماجی خدمات انجام دیتا رہا ۔ مفت طبی کیمپ پورے ضلع میں منظم کرتے ہوئے ہزاروں مریضوں کا علاج کیا گیا ۔ حلقہ اسمبلی کریم نگر سے کامیابی کے بعد مزید بہتر طریقہ سے عوامی خدمت کیلئے ہی میں نے سیاست میں قدم رکھا ہے ۔ ایک سیاسی قائد کی جانب سے اس الزام کے بارے میں پوچھے جانے پر کہ کروڑوں روپئے دے کر آپ نے ٹکٹ حاصل کیا ہے ۔ اس سوال پر کہ آپ سماجی بھلائی کے تحت کونسان پروگرام جاری رکھے ہوئے ہیں ۔

اس پر انہوں نے کہا کہ ان کے دواخانہ کے تحت کینسر کے تقریباً 180 مریضوں کا مفت علاج کیا گیا ۔ 2009 میں ڈینگو سے متاثرہ 10 ہزار مریضوں 2011 میں 22 ہزار متاثرہ مریضوں بہت ہی کم خرچ پر علاج کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ وہ حکومت کی تمام اسکیمات سے عوام کو فائدہ پہونچانے کیلئے کام کر رہے ہیں ۔ اس سوال پر کہ آپ کس ایجنڈہ کے ساتھ عوام کے سامنے جارہے ہیں ۔ اس کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیما آندھرا میں کانگریس پارٹی کو نقصان کے خطرہ کے باوجود سونیا گاندھی نے تلنگانہ عوام کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے تلنگانہ کا قیام عمل میں لایا جو ایک جرائتمندانہ فیصلہ ہے ۔ چنانچہ عوام کو چاہئے کہ وہ بھی کانگریس کو کامیاب بناتے ہوئے سونیا گاندھی سے اظہار تشکر کریں ۔انہوں نے بتایا کہ موجودہ رکن اسمبلی نے حلقہ میں کسی بھی ترقیاتی پروگرام کو روبعمل نہیں لایا ہے ۔ اگر میں منتخب ہوجاؤں گا تو عوام کو تمام بنیادی سہولتوں کی فراہمی کیلئے حتی القدور کوشش کروں گا ۔ منصوبہ بند طریقہ سے سرکاری اسکولوں میں معیاری تعلیم کی فراہمی کیلئے موثر اقدامات کرنے کا انہوں نے تیقن دیا ۔ دیہی سطح سے ضلع سطح تک کے بے روزگاروں کو روزگار سے وابستہ کرنے کیلئے انہیں فنی تربیت کے ساتھ ساتھ بنکوں سے قرض فراہمی کیلئے نمائندگی کروں گا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارلیمانی امیدوار پونم پربھاکر سے ہمارے اچھے تعلقات ہیں ۔ مجھے توقع ہے کہ رائے دہندے مجھے بھاری اکثریت سے کامیاب کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT