Thursday , January 18 2018
Home / اضلاع کی خبریں / حق رائے دہی کے استعمال میں کوتاہی نہ کرنے پر زور

حق رائے دہی کے استعمال میں کوتاہی نہ کرنے پر زور

ضلع کلکٹر نظام آباد پردیو مینا کا نمائندہ سیاست محمد جاوید علی کو انٹرویو

ضلع کلکٹر نظام آباد پردیو مینا کا نمائندہ سیاست محمد جاوید علی کو انٹرویو

نظام آباد۔18 مارچ(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع کلکٹر مسٹر پردیو مینا نے آج نمائندہ سیاست محمد جاویدعلی سے خصوصی طورپر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ شہر نظام آباد میں رائے دہی کے پرُ امن انعقاد کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں انہوں نے کہا کہ شہر نظام آباد میں گذشتہ ضمنی انتخابات میں رائے دہی سست رفتار رہی اوررائے دہی 45 فیصد رہی تھی اس لئے اس مرتبہ رائے دہی میں اضافہ کیلئے رائے دہندگان کو ابھی سے ترغیب دیتے ہوئے ان مین شعور بیدار کیا جارہا ہے شہر نظام آباد میں فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی کرتے ہوئے مقام پر نہ رہنے والے افراد کے ناموں کو حذف کرنے کے علاوہ نئے ناموں کو حذف کرنے کے علاوہ نئے ناموں کا اندراج کیا گیا ہے ضلع کلکٹر نے کہا کہ حق رائے دہی جمہوری حق ہے اس کیلئے بڑے پیمانے پر گذشتہ چند دنوں سے شعور بیداری مہم چلائی جارہی ہے اور رائے دہندگان اپنے حق رائے دہی کے استعمال میں لاپرواہی نہ برتیں کیوں کہ حق رائے دہی کا استعمال نہ کرنے کی وجہ سے بسااوقات میں نقصانات پیش آتے ہیں کیونکہ صحیح امیدوار نہ منتخب ہونے کی صورت میں عوامی مسائل کو حل کرنے میں دشواریاں پیش آئے گی لہذا شہر نظام آباد میں حق رائے دہی کے استعمال کیلئے بڑے پیمانے پر شعور بیدار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔گذشتہ کے مقابلہ اس مرتبہ کم از کم 75% رائے دہی کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ شہر نظام آباد میں خصوصی مہم چلاتے ہوئے فہرست رائے دہندگان کے ناموں کے اندراج کیلئے کوشش کی گئی اور گھر گھر پہنچ کر فہرست رائے دہندگان پر نظر ڈالی گئی اور 30 ہزار غلط ناموں کا حذف کیا گیا ۔ 15ہزار نئے ناموں کو اندراج کیا گیا اس کے باوجود بھی رائے دہندگان کو اپنے نام حذف ہونے کی صورت میں دوبارہ فارم 6کے ذریعہ اپنے ناموں کو اندراج کرنے کے خصوصی موقع فراہم کئے گئے ۔ قومی فہرست رائے دہندگان کے موقع پر جو نام اندراج کئے گئے ہیں انہیں اسمبلی انتخابات میں حق رائے دہی کا موقع فراہم کیا جائیگا اور 2؍ مارچ سے قبل جن افراد کے نام فہرست رائے دہندگان میں شامل کیلئے درخواست گذاری کی تھی ان تمام افراد کے نام درست ہونے کی صورت میں انہیں بلدی انتخابات میں رائے دہی کا موقع فراہم کیا جارہا ہے شہر نظا م آباد میں کارپوریشن کے انتخابات کے پرُ امن انعقاد کیلئے خصوصی اقدامات کئے جارہے ہیں ۔50 ڈویژنوں میں 52 عہدیداروں کو خصوصی طور پر تعینات کیا جارہا ہے یہ عہدیدار 50 ڈویژنوں میں ہونے والے سرگرمیوں پر نظر رکھیں گے ۔ اس کے علاوہ بغیر اجازت کسی کو بھی ریالی، جلوس ، جلسہ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انتخابات میں روپئے اور دیگر چیزوں کا استعمال کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں ضلع کلکٹر نے کہا کہ 50ڈویژنوں کے امیدواروں کے بارے میں تمام تفصیلات حاصل کی گئی ہے اورجو امیدوار زیادہ سے زیادہ روپئے خرچ کرنے کے موقف میں ہے ان پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے اور اس کی رپورٹ بھی حاصل کی گئی ہے۔ اور رائے دہندگان کو لالچ دینے کی صورت میں ان کیخلاف سخت اقدامات کئے جائیں گے لہذا امیدوار انتخابی مہم قواعد کے مطابق چلانے، بغیر اجازت پوسٹرس، بیانرس نہ لگانے کی ہدایت دی۔ انہوں نے کہا کہ 20 مارچ کے روز سے رائے دہندگان کو سلپس تقسیم کی جائے گی

اس سلپس پر رائے دہندہ کی تصویر رہے گی لیکن اس کے باوجود بھی شناختی کارڈ ساتھ میں رکھنے کی خواہش کی ۔ 13اقسام کے شناختی کارڈ میں کوئی بھی ایک کارڈ ساتھ میں رکھنے کی صورت میں انہیں حق رائے دہی کا موقع فراہم کیا جائیگا۔ ضلع کلکٹر نے کہا کہ سلپ کے حاصل کے بعد اپنے پولنگ مرکز کی نشاندہی رائے دہی سے قبل ہی کریں کیونکہ قبل از استعمال کردہ پولنگ مرکز کے تبدیلی کے بھی امکانات ہیں لہذا اس پر غور کریں جملہ 228 بوتھس قائم کئے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ صبح 7 بجے سے رائے دہی کا آغاز ہوگا پولنگ سے قبل ماک پول کیا جائیگا اس کے بعد رائے دہی شروع ہوگی۔ ضلع کلکٹر نے کہا کہ اسمبلی اور پارلیمانی انتخابات کیلئے بھی تمام اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ ضلع کے 9 اسمبلی حلقہ جات میں 20 سکٹرل آفیسرس کے علاوہ 9 ویڈیو گرافرس، 9 ویڈیو ٹیمس ،9 اکائونٹ آفیسرس، 9 اسسٹنٹ اور تحصیلدار ریٹرننگ آفیسر بھی جائزہ لیتے رہیں گے۔ اس مرتبہ بغیر اجازت گاڑیوں کے استعمال پر سخت نگاہ رکھی گئی ہے اور اس کیلئے ٹرانسپورٹ عہدیداروں کو دیگر اقدامات انجام دئیے جارہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT