Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / حق میں فیصلہ آنے پر بھی زمین ہندووں کو دی جائے

حق میں فیصلہ آنے پر بھی زمین ہندووں کو دی جائے

بابری مسجد کی ملکیت کا مقدمہ

نائب صدر مسلم پرسنل لا بورڈ و شیعہ رہنما مولانا کلب صادق کا بیان
لکھنؤ13اگست (سیاست ڈاٹ کام) آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے نائب صدر اور معروف شیعہ مذہبی رہنما مولانا کلب صادق نے کہا ہے کہ ایودھیا کی بابری مسجد کا فیصلہ اگر حق میں ہو جائے تب بھی اس زمین کو ہندوؤں کو سونپ دینی چاہئے ۔مولانا صادق نے آج یہاں کہا ‘بابری مسجد کی زمین ہندوؤں کو ملنی ہی چاہئے ۔ وہ ملک کے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہ مسلمانوں کے حق میں فیصلہ آنے پر بھی اسے ہندوؤں کو سونپ دینی چاہئے ‘۔انہوں نے کہاکہ ‘میرا خیال ہے کہ ایک مسجد چلی جائے گی لیکن کروڑوں دل مل جائیں گے ۔ اس لئے میں چاہتا ہوں کو بابری مسجد کی زمین ہندوؤں کو سونپ دیا جائے ۔’شیعہ مذہبی رہنما نے کہاکہ یہ مسئلہ ہندو۔مسلم کا نہیں ہے ۔ یہ ملک کا مسئلہ ہے اس لئے انہوں نے یہ اپیل ملک کے عوام سے کی۔واضح رہے کہ حال ہی میں شیعہ سنٹرل وقف بورڈ نے بھی بابری مسجد کی جگہ مندر بنانے اور مسلم اکثریتی علاقے میں مسجد بنائے جانے سے متعلق بیان دیا تھا۔ بورڈ کے صدر وسیم رضوی نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں اس سلسلے میں حلف نامہ داخل کیا گیا ہے ۔

 

TOPPOPULARRECENT