Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / حلقہ اسمبلی راجندر نگر سے سید شفیع اللہ قادری ایڈوکیٹ ویلفیر پارٹی کے امیدوار

حلقہ اسمبلی راجندر نگر سے سید شفیع اللہ قادری ایڈوکیٹ ویلفیر پارٹی کے امیدوار

حیدرآباد ۔ 17 ۔ مارچ : حلقہ اسمبلی راجندر نگر تعلیمی اور معاشی لحاظ سے انتہائی پسماندہ علاقہ ہے جہاں رائے دہندوں کی جملہ تعداد 2 لاکھ نوے ہزار ہے اور اس میں سے مسلم رائے دہندے 90 ہزار کی تعداد تک پہنچ گئے ہیں ۔ اس حلقہ میں کسی دیانت دار ، عوامی خدمت کے جذبہ سے سرشار اور تعلیم یافتہ مسلم امیدوار کو میدان میں اتارا جائے تو دلتوں اور پسماند

حیدرآباد ۔ 17 ۔ مارچ : حلقہ اسمبلی راجندر نگر تعلیمی اور معاشی لحاظ سے انتہائی پسماندہ علاقہ ہے جہاں رائے دہندوں کی جملہ تعداد 2 لاکھ نوے ہزار ہے اور اس میں سے مسلم رائے دہندے 90 ہزار کی تعداد تک پہنچ گئے ہیں ۔ اس حلقہ میں کسی دیانت دار ، عوامی خدمت کے جذبہ سے سرشار اور تعلیم یافتہ مسلم امیدوار کو میدان میں اتارا جائے تو دلتوں اور پسماندہ طبقات کی مدد سے اسے کامیابی حاصل ہوسکتی ہے ۔ ہندوستان میں دلت مسلم اتحاد کا نعرہ دینے والی ویلفیر پارٹی آف انڈیا نے حلقہ اسمبلی راجندر نگر کے عوام میں پائی جانے والی پسماندگی دور کرنے کے مقصد سے کشن باغ کے رہنے والے 31 سالہ اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوان سید شفیع اللہ قادری ایڈوکیٹ کو اپنا امیدوار نامزد کیا ۔ سید شفیع اللہ قادری ایڈوکیٹ جنہوں نے انوارالعلوم سے گریجویشن کی تکمیل کے بعد سلطان العلوم کالج آف لاء سے ایل ایل بی و ایل ایل ایم کیا ہے ۔

انہوں نے بات چیت میں بتایا کہ وہ کافی عرصہ سے اس علاقہ میں عوامی خدمت انجام دے رہے ہیں ۔ انہیں اس بات کا بخوبی اندازہ ہے کہ حلقہ اسمبلی راجندر نگر کے علاقوں حسن نگر ، سلیمان نگر ، وادی محمود ، چنتل میٹ ، شمس آباد کے علاوہ دیگر حصوں میں کافی پسماندگی پائی جاتی ہے ۔ مسلمان تعلیمی شعبہ کے ساتھ ساتھ معاشی شعبہ میں بھی انتہائی کمزور ہیں ۔ نوجوانوں میں بیروزگاری اپنے نقطہ عروج پر ہے ۔ موجودہ ایم ایل اے تلگو دیشم کے پرکاش گوڑ عوام کی توقعات پر پورا اترنے میں ناکام رہے ۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ ویلفیر پارٹی آف انڈیا ایک صاف ستھرے سیاسی نظام میں یقین رکھتی ہے ۔ چنانچہ پارٹی نے راجندر نگر حلقہ سے اپنا امیدوار بنانے کا فیصلہ کیا وہ کہتے ہیں کہ علاقہ کے عوام کے مسائل کی یکسوئی ، سرکاری محکموں سے رشوت کا خاتمہ ، اور حلقہ کی ہمہ جہتی ترقی ان کی اولین ترجیحات میں شامل ہے ۔

حلقہ راجندر نگر میں چونکہ تعلیمی پسماندگی بہت زیادہ ہے اس لیے یہاں آبادی کے تناسب سے سرکاری اسکولوں کی تعمیر ضروری ہے ہر محلہ میں سرکاری دواخانوں و کلینک کی فراہمی نوجوانوں کے لیے کھیل کے میدان ، دلتوں و اقلیتوں کو سرکاری اسکیمات سے مکمل استفادہ کروانے کے علاوہ خود کی خود روزگار اسکیم کی گھر گھر رسائی ، بے گھر عوام کو مکانات کی فراہمی ، بے روزگاروں کے لیے قرض ، وقف جائیدادوں کے تحفظ کو انہوں نے ترجیح دی ہے اور ان مقاصد کو عملی جامہ پہنانے کے لیے ہی وہ انتخابی میدان میں اتر رہے ہیں ۔ انہوں نے ایک اور سوال کے جواب میں بتایا کہ آروگیہ شری کے تحت جتنی ہیلتھ اسکیمات ہے اس کے ثمرات سے عوام کو واقف کروانے کی مسلسل کوشش کررہے ہیں ۔ سید شفیع اللہ قادری ایڈوکیٹ کو امید ہے کہ اس مرتبہ راجندر نگر میں پسماندہ طبقات اور مسلمان ایک دیانت دار امیدوار کو منتخب کریں گے ۔ اپنی سماجی و سیاسی سرگرمیوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ وہ ایس آئی او کے تقریبا 14 سال سے وابستہ ہیں ۔ 2000 میں رکن ، 2004 میں چارمینار یونٹ کے صدر اور 2009 میں ایس آئی او سٹی یونٹ کے صدر مقرر کئے گئے ۔ وہ کہتے ہیں کہ راجندر نگر میں موقوفہ جائیدادوں کا تحفظ بہت ضروری ہے ۔ مسلم علاقوں میں قبرستان ہی نہیں ایسے میں وہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور مسلم علاقوں کے قریب قبرستان کے لیے سرکاری اراضیات کے حصول کی کوشش کرنا چاہیں گے ۔

اپنی کامیابی کے بارے میں پوچھنے پر سید شفیع اللہ قادری نے کہا کہ ویسے تو گذشتہ امتحانات میں آزاد امیدواروں کی حیثیت سے چند مسلم امیدواروں نے حصہ لیا تھا لیکن اب لگتا ہے کہ ایم آئی ایم بھی راجندر نگر سے اپنا امیدوار اتارے گی اور اس حلقہ میں پہلی مرتبہ دو اہم جماعتوں کے مسلم امیدوار ہوں گے ۔ ایسے میں رائے دہندوں سے یہی کہیں گے جذبہ خدمت خلق ، صاف ستھرا ریکارڈ اور دیانت داری کو ترجیح دیں ان کا سمجھنا ہے کہ تلگو دیشم رکن اسمبلی پرکاش گوڑ سے ہی ان کا اصل مقابلہ ہے ۔ اس لیے کہ مقامی عوام خاص کر مسلمان ایک ایسے نمائندہ کو منتخب کرنے کے خواہاں ہیں جو حلقہ میں تعلیمی و معاشی انقلاب برپا کردے ۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ کل ہی چنتل میٹ میں پارٹی دفتر کا صدر ریاستی یونٹ ملک معتصم خاں کے ہاتھوں افتتاح عمل میں آیا ۔ پلر نمبر 193 کے قریب واقع اس دفتر میں عوام کا تانتا باندھا ہوا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT