Monday , January 22 2018
Home / Top Stories / حماس کا صفایا کرنے تک جنگ جاری رہے گی

حماس کا صفایا کرنے تک جنگ جاری رہے گی

غزہ/یروشلم ۔24اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) غزہ پر آج کی گئی اسرائیلی بمباری میں کم از کم 14فلسطینی جاں بحق ہوگئے ہیں ۔ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو نے قسم کھائی ہے کہ حماس کا صفایا کرنے تک ان کی فوج غزہ پر بمباری کرے گی اور یہ جنگ جتنا ممکن ہوسکے طویل ہوگی ۔ اسرائیلی بمباری 48ویں دن میں داخل ہوئی ہے ۔ اب تک 2500سے زائد فلسطینی جاں بحق ہوئے ہیں

غزہ/یروشلم ۔24اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) غزہ پر آج کی گئی اسرائیلی بمباری میں کم از کم 14فلسطینی جاں بحق ہوگئے ہیں ۔ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو نے قسم کھائی ہے کہ حماس کا صفایا کرنے تک ان کی فوج غزہ پر بمباری کرے گی اور یہ جنگ جتنا ممکن ہوسکے طویل ہوگی ۔ اسرائیلی بمباری 48ویں دن میں داخل ہوئی ہے ۔ اب تک 2500سے زائد فلسطینی جاں بحق ہوئے ہیں ۔ اسرائیل نے آج اپنی فوجی کارروائیوں کو ایک نئے طریقہ سے شروع کیا ۔ غزہ میں واقع 13منزلہ عمارت پر بم برساتے ہوئے اسے زمین بوس کردیا ۔ اسرائیل کے آج کئے گئے حملے کل کے مقابلے نسبتاً کم تھے جہاں تقریباً 60 فضائی حملے کئے گئے اور اس میں 10 فلسطینی جاں بحق ہوئے تھے۔ ان میں خواتین اور بچوں کی اکثریت ہے۔ اس کے علاوہ 12 منزلہ اپارٹمنٹ کو بھی بمباری کا نشانہ بناتے ہوئے زمین دوز کردیا گیا۔ مصر کی مصالحتی کوشش تاحال کامیاب نہ ہوسکی اور دونوں فریقوں کی طرف سے کوئی مثبت اشارہ نہیں ملا ہے۔ مصر نے پھر ایک بار اپیل کی ہے کہ فریقین کو قابل قبول مصالحت کیلئے مذاکرات کی میز پر آنا چاہئے۔ اسرائیلی فوج نے آج بتایا کہ اس کے طیاروں نے غزہ میں 20 نشانوں پر بمباری کی۔ دوسری طرف دہشت گردوں (حماس) نے اسرائیل پر 20 راکٹس یا مارٹر راؤنڈس فائر کئے۔ غزہ سٹی کے مغربی علاقہ میں دو فلسطینی جاں بحق ہوگئے اور 5 زخمی ہوگئے۔

اس دوران وزیراعظم اسرائیل بنیامن نتن یاہو، حماس کا ظالم دہشت گرد گروپ ’’داعش‘‘ سے تقابل کرتے ہوئے کہا کہ غزہ میں اسرائیل کی کارروائی اُس وقت تک جاری رہے گی جب تک ہم اپنا مقصد پورا نہیں کرلیتے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ راکٹس فائر کرنے والوں کیساتھ کوئی رعایت نہیں ہونی چاہئے اور یہ پالیسی ہر محاذ پر اور ہر ایک کے ساتھ مطابقت رکھتی ہے۔ انہوں نے ہفتہ وار کابینی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ آج صبح اسرائیل کے جنوبی علاقوں میں غزہ سے تقریباً 15 راکٹس فائر کئے گئے۔ اس کے علاوہ شام اور لبنان سے بھی تقریباً 5 راکٹس فائر کئے گئے۔ غزہ پٹی میں اسرائیل کی مسلسل کارروائی کا حوالہ دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ جب تک ہمارا مقصد پورا نہیں ہوتا، یہ مہم جاری رہے گی اور اس کیلئے وقت لگ سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس معاملے میں تنہا نہیں ہیں، حماس دراصل آئی ایس آئی ایس (داعش) اور آئی ایس آئی ایس دراصل ’’حماس‘‘ ہے۔ یہ ایسے گروپس ہیں جنہیں بچوں کی ہلاکتوں کی کوئی پرواہ نہیں اور وہ اپنے مقصد کو پورا کرنے سے ہی دلچسپی رکھتے ہیں۔ حماس نے حال ہی میں 3 اسرائیلی کمسن لڑکوں کے اغوا اور ہلاکت کا اعتراف کیا تھا اور ساری دُنیا ہر گذرتے دن کے ساتھ اس حقیقت کو سمجھ رہی ہے۔

نتن یاہو نے کہا کہ وہ انسانی حقوق نہیں چاہتے بلکہ ’’نظام خلافت‘‘ نافذ کرنا چاہتے ہیں۔ اسرائیل کے جنوبی علاقہ کے برہم مکینوں سے خطاب کرتے ہوئے نتن یاہو نے کہا کہ وہ ان کے احساسات اور تکلیف کا احترام کرتے ہیں۔ان متاثرہ افراد سے کہا گیا تھا کہ وہ اپنے گھروں کو واپس ہوسکتے ہیں لیکن جنگ بندی کی کوششیں ناکام ہوچکی ہیں اور جنگ دوبارہ شروع ہوگئی ہے۔ اس کی وجہ سے یہ لوگ کافی برہم تھے۔ اس دوران مصر کی وزارتِ خارجہ نے دونوں فریقین پر زور دیا ہے کہ وہ دوبارہ مذاکرات کی میز پر آئیں اور جاریہ جنگ کو مستقل طور پر ختم کریں۔

TOPPOPULARRECENT