Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت اسمبلی اجلاس میں عوامی مسائل پر بحث کے لیے تیار

حکومت اسمبلی اجلاس میں عوامی مسائل پر بحث کے لیے تیار

ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ کی تائید نہیں کی جائے گی : ٹی ہریش راؤ
حیدرآباد ۔ 25۔ اکتوبر (سیاست نیوز) وزیر آبپاشی و امور مقننہ ٹی ہریش راؤ نے کہا کہ حکومت 27 اکتوبر سے شروع ہونے والے اسمبلی اجلاس میں عوامی مسائل پر مباحث کیلئے تیار ہے۔ انہوں نے اس بات کا اشارہ دیا کہ حکومت 3 تا 4 ہفتے اسمبلی اجلاس کے انعقاد کے حق میں ہے ۔ تاہم قطعی فیصلہ بزنس اڈوائزری کمیٹی کے اجلاس میں کیا جائے گا ۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ حکومت مباحث کیلئے تیار ہے، تاہم ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ اور گڑبڑ کی ہرگز تائید نہیں کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے پاس کوئی مسائل نہیں ہیں، لہذا وہ سیاسی مقصد براری کیلئے مختلف احتجاجی پروگراموں کا منصوبہ بنا رہی ہے ۔ اگر اپوزیشن عوامی مسائل کیلئے تیار ہوں تو حکومت تفصیلی مباحث اور اس کا جواب دینے کیلئے تیار ہے۔ اسمبلی اجلاس کے پہلے ہی دن کانگریس کی جانب سے چلو اسمبلی پروگرام کے اعلان پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ یہ خود اس بات کا ثبوت ہے کہ کانگریس مسائل سے خالی ہے اور وہ عوامی ہمدردی حاصل کرنے کیلئے مختلف بہانے تلاش کر رہی ہے۔ ہریش راؤ نے کانگریس قائدین بالخصوص رکن اسمبلی کے وینکٹ ریڈی سے خواہش کی کہ وہ چلو اسمبلی پروگرام سے دستبرداری اختیار کرلیں۔ حکومت تمام مسائل پر مباحث کیلئے تیار ہے اور کانگریس کو کوئی بھی اعتراض ہو تو وہ بی اے سی اجلاس میں پیش کرسکتی ہے۔ ہریش راؤ نے کہا کہ اگر کانگریس اس بات کی ضد کرے کہ ایوان میں بات نہیں کرے گی اور سڑک پر ہی احتجاج کریں گے تو ان کیلئے کوئی مدد نہیں کرسکتا۔ اگر حکومت کے پاس مسائل کا جواب نہیں ہے تو سڑک پر بیٹھنے کے کوئی معنی ہوسکتے ہیں لیکن یہاں حکومت جواب دینے کیلئے تیار ہے۔ لہذا احتجاج کا اعلان بے معنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی کسی بھی صورت میں ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر چلو اسمبلی احتجاج کے دوران کچھ بھی ہوتا ہے تو اس کیلئے کانگریس پارٹی ذمہ دار ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی میں جن کی آواز نہیں ہے ، وہ چلو اسمبلی جیسے پروگرام منعقد کرتے ہیں اور کانگریس پارٹی اسمبلی میں عوامی مسائل کو پیش کرنے کے بجائے سڑک پر احتجاج کی تیاری کر رہی ہے جو اس کی گھٹیا سیاست کا ثبوت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پا رٹی عوامی مسائل اور حکمت عملی دونوں سے محروم ہے۔ گزشتہ سیشن میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے آبپاشی پراجکٹس پر پاور پوائنٹ پریزینٹیشن پیش کیا تھا لیکن اپوزیشن جماعتوں نے راہِ فرار اختیار کی ۔ ہریش راؤ نے کہا کہ وہ قائد اپوزیشن جانا ریڈی کی سینیاریٹی کے اعتبار سے احترام کرتے ہیں اور ان سے خواہش کرتے ہیں کہ وہ چلو اسمبلی مسئلہ پر اپنا محاسبہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ جانا ریڈی سے احتجاج سے دستبرداری اختیار کرنے کی اپیل کی جائے گی ۔ جانا ریڈی کو چاہئے کہ وہ اپنا بڑا پن برقرار رکھنے کیلئے اس فیصلہ پر نظرثانی کریں۔ قائد اپوزیشن کی حیثیت سے وہ کس طرح اسمبلی کے گھیراؤ کی اجازت دے سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت سے ریاست کی عوام خوش اور مطمئن ہیں اور وہ اپوزیشن کے گمراہ کن پروپگنڈہ کا شکار نہیں ہوں گے۔ انہوں نے اپوزیشن جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ کارروائی میں رکاوٹ کے بجائے عوامی مسائل پر مباحث کے مقصد سے اسمبلی اجلاس میں شرکت کریں۔ انہوں نے کہا کہ نئی ریاست تلنگانہ کی ترقی کیلئے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ دن رات محنت کر رہے ہیں۔ ہریش راؤ نے کہا کہ دیگر ریاستوںکی اسمبلیوں کے مقابلے تلنگانہ اسمبلی کی کارروائی کا جائزہ لیا جائے تو اندازہ ہوگا کہ کسی بھی ریاست میں اپوزیشن کو اس قدر اظہار خیال کا موقع نہیں دیا جاتا۔ اس کے علاوہ تلنگانہ اسمبلی کی کارروائی بہتر انداز میں چلائی جاتی ہے ، جس کی مثال دوسری ریاستیں قبول کر رہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT