Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت تلنگانہ کاعازمین حج کیلئے اچھے انتظامات کرنے کا عزم

حکومت تلنگانہ کاعازمین حج کیلئے اچھے انتظامات کرنے کا عزم

عازمین حج کے تربیتی اجتماعات کا آغاز، ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ الحاج محمد محمود علی و دیگر کا خطاب

عازمین حج کے تربیتی اجتماعات کا آغاز، ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ الحاج محمد محمود علی و دیگر کا خطاب
حیدرآباد 19 اپریل (پریس نوٹ) الحاج محمد محمود علی ڈپٹی چیف منسٹر ریاست تلنگانہ نے کہاکہ حکومت گزشتہ سال کی طرح اس سال بھی عازمین حج کے لئے بہترین انتظامات کرے گی۔ عازمین حج، اللہ تعالیٰ کے مہمان ہوتے ہیں۔ اس طرح وہ ہمارے بھی مہمان ہوتے ہیں اور حکومت کی خوش نصیبی ہے کہ اس کو ان کی خدمت کا موقع مل رہا ہے۔ وہ آج ہائی ٹیک گارڈن فنکشن ہال، واحد نگر قدیم ملک پیٹ میں تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی کے زیراہتمام عازمین حج کے پہلے تربیتی اجتماع سے خطاب کررہے تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ گزشتہ سال ملک بھر میں ہماری ریاست کے انتظامات سب سے اچھے تھے۔ اس سال بھی یہی کوشش کی جائے گی۔ گزشتہ دو سال سے حجاج کرام کو رباط میں قیام کا موقع نہیں مل رہا تھا، تاہم وہ اس بات کی بھرپور کوشش کررہے ہیں کہ عزیزیہ زمرہ کے 600 عازمین کو قیام کی سہولت مل سکے۔ جناب محمود علی نے کہاکہ چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے عازمین حج کے لئے بہترین انتظامات کرنے کی ہدایت دی ہے۔ وہ تلنگانہ کے لئے مزید دو ہزار نشستوں کا کوٹہ حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے حج کے انتظامات کرنے پر اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور کی خدمات کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ عازمین حج کی خدمت بھی باعث اجر و ثواب ہے۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ حجاج کرام کو مدینہ منورہ میں کھانا فراہم کیا جائے گا۔ مکہ معظمہ میں رہائش اور دیگر سہولتوں کی فراہمی کے لئے ایک وفد روانہ کرنے کی بھی تجویز ہے۔ جناب سید عمر جلیل اسپیشل سکریٹری محکمہ اقلیتی بہبود نے عازمین حج کو مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ علماء کرام کو فضائل، مسائل اور مناسک سے واقف کروائیں گے جسے عازمین ذہن نشین کرلیں۔ ساتھ ہی سفر حج سے متعلق ضروری باتیں بھی یاد رکھیں۔ اُنھوں نے کہاکہ سفر حج میں مشکلات اور تکالیف ضرور پیش آئیں گی جس کے لئے وہ تیار رہیں۔ ڈائرکٹر محکمہ اقلیتی بہبود جناب محمد جلال الدین اکبر نے کہاکہ ہر صاحب استطاعت پر حج فرض ہے لیکن صرف چند ایک کو ہی دعوت ملتی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ تلنگانہ میں مسلمان بہت پریشان ہیں اور مسائل کا شکار ہیں۔ ان میں غربت ہے، علم کی کمی ہے۔ حیدرآباد اور اطراف و اکناف میں 1100 سلم علاقے ہیں جن میں اکثریت مسلمانوں کی ہے۔ اُن میں سماجی مسائل بھی بے شمار ہیں۔ حجاج کرام مسلمانوں کی ترقی اور فلاح و بہبود اور ملک و ریاست کے لئے دعا کریں۔ اسپیشل آفیسر تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے صدارت کی۔ اُنھوں نے عازمین حج کے لئے کئے جارہے انتظامات پر تفصیلی روشنی ڈالی اور کہاکہ حج کے دوران صبر کی بڑی ضرورت ہوتی ہے۔ مرکزی حج کمیٹی، قونصل جنرل حج جدہ کے تعاون سے اسلامک ڈیولپمنٹ بینک کے زیراہتمام قربانی کا انتظام کررہی ہے۔ مدینہ منورہ میں طعام کی فراہمی کا بھی انتظام کیا جارہا ہے جس کے لئے جملہ 600 سعودی ریال کے مصارف عائد ہوں گے اور اس سال حج کمیٹی تمام عازمین کو دو عدد سوٹ کیسیس بھی فراہم کرنے پر غور کررہی ہے۔ اجتماع کا آغاز حافظ و قاری صابر پاشاہ کی قرأت کلام پاک سے ہوا۔ جناب انصار انور اور جناب عرفان شریف نے نعت شریف سنائی۔ جناب محمد عبدالقدیر اور جناب محمد عبدالعزیز نے مہمانان خصوصی کی گلپوشی و شال پوشی کی۔ جناب ایم اے رفیع قریشی نے استقبال کیا۔ مولانا سید شاہ اعظم علی صوفی صدر کل ہند جمعیۃ المشائخ نے کہاکہ حج بدنی و مالی عبادت کا مجموعہ ہے اور یہ وہ عبادت ہے جسے دیکھ کر نہیں کیا جاسکتا بلکہ اسے سیکھنا پڑتا ہے۔ حرم شریف میں 120 رحمتیں نازل ہوئی ہیں۔ اس لئے وہاں ایک ایک منٹ استعمال کریں۔ الحاج خواجہ معین الدین نے فضائل و مناسک حج پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ مولانا عبدالرشید طلحہ نے زیارت روضۂ نبوی صلی اللہ علیہ و سلم کے آداب بیان کئے۔ الحاج محمد اشفاق علی حسامی نے احرام باندھنے کا طریقہ دکھایا۔ خواتین کے لئے پردہ کا خصوصی انتظام کیا گیا تھا۔ ماسٹر ٹرینر جناب خواجہ نصیرالدین نے سفر سے متعلق اہم اُمور بیان کئے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT