Thursday , April 26 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت تلنگانہ کا بجٹ حقائق سے بعید

حکومت تلنگانہ کا بجٹ حقائق سے بعید

چیف منسٹر پر عوام کی امیدوں پر پانی پھیرنے کا الزام ، ایس وینکٹ ویریا
حیدرآباد ۔ 19 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : تلگو دیشم کے اسمبلی ایس وینکٹ ویریا نے تلنگانہ حکومت کی جانب سے پیش کردہ بجٹ کو حقائق سے بعید قرار دیتے ہوئے عوام کی امیدوں پر پانی پھیر دینے کا چیف منسٹر کے سی آر پر الزام عائد کیا ۔ آج اسمبلی میں بجٹ مباحث میں حصہ لیتے ہوئے ایس وینکٹ ویریا نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے غریب عوام کے لیے ریاست میں تین لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ تاہم 4 سال کے دوران صرف 9 ہزار ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کیے گئے ہیں ۔ بجٹ میں ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیرات کے لیے 2 ہزار کروڑ روپئے مختص کئے گئے ۔ جس سے ماباقی ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیرات کو یقینی بنانا ممکن نہیں ہے ۔ حکومت کے پاس صرف 6 ماہ کا وقت رہ گیا ہے ۔ اس کے بعد انتخابی تیاریوں کا آغاز ہوجائے گا ۔ ٹی آر ایس نے دلتوں میں فی کس 3 ایکڑ اراضی تقسیم کرنے کا اعلان کیا ۔ ریاست میں 35 لاکھ دلت خاندان ہیں ۔ ان میں 10 لاکھ ایکڑ اراضی تقسیم ہونی چاہئے ۔ مگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ حکومت نے ابھی تک صرف 12 ہزار ایکڑ اراضی ہی تقسیم کیا ہے ۔ تلگو دیشم کے رکن اسمبلی نے کہا کہ حکومت کے پلان اور عمل میں زمین آسمان کا فرق ہے ۔ ریاست کے مختلف سرکاری محکمہ جات میں 2 لاکھ جائیدادیں مخلوعہ ہیں ۔ حکومت نے اقتدار حاصل کرتے ہی بیروزگار نوجوانوں کو ایک لاکھ ملازمتیں فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے ۔ مگر ان چار سال کے دوران صرف 27 ہزار جائیدادوں پر تقررات کیے گئے ہیں ۔ چیف منسٹر نے اسمبلی میں ڈی ایس سی کا انعقاد کرنے کا اعلان کیا جس پر کوئی عمل آوری نہیں ہوئی ۔ انہوں نے وظیفہ کی اسکیم بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا کہ یہ ریاستوں کے اختیارات میں ہیں ۔ ٹی آر ایس حکومت پنشن اسکیم بحال کرتے ہوئے سارے ملک کے لیے ایک مثال قائم کریں ۔ ماضی کی حکومت نے غریب عوام کو راشن شاپس سے 9 اشیاء سربراہ کیا کرتی تھی ۔ ٹی آر ایس کے دور حکومت میں صرف چاول تقسیم کیا جارہا ہے ۔ باقی تمام اشیاء کو برخاست کرتے ہوئے غریب عوام پر مالی بوجھ عائد کردیا گیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT