Monday , January 22 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت تلنگانہ کو سیاسی کھیل بند کرنے کا مشورہ

حکومت تلنگانہ کو سیاسی کھیل بند کرنے کا مشورہ

دریائے کرشنا کے پانی سے بہتر استفادہ کیلئے آندھراپردیش کی خواہش

دریائے کرشنا کے پانی سے بہتر استفادہ کیلئے آندھراپردیش کی خواہش
حیدرآباد۔27اکٹوبر ( پی ٹی آئی) دریائے کرشنا کے پانی سے استفادہ اور برقی کی پیداوار کے مسئلہ پر تلنگانہ اور آندھراپردیش کی حکومتوں کے درمیان جاری لفظی جنگ اور الزام تراشیوں کا مقابلہ آج مزید شدت اختیار کرگیا جب آندھراپردیش نے آج یہ کہہ دیا کہ تلنگانہ کے ’’ بدمعاش و شرپسند ریاست‘‘ جیسے رویہ کی حوصلہ افزائی نہیں کی جانی چاہیئے ۔ حکومت آندھراپردیش نے اپنی نئی پڑوسی ریاست سے یہ بھی کہا کہ وہ اپنا سیاسی کھیل اب بند کرے اور دونوں ریاستوں میں کسانوں کے مفادات کے تحفظ کیلئے دریائے کرشنا کے پانی سے بہتر استفادہ کو یقینی بنانے میں تعاون کرے ۔ چندرا بابو نائیڈو کی حکومت نے کہا کہ وہ چاہتی ہے کہ حکومت تلنگانہ ‘ آندھراپردیش تنظیم جدید قانون اور دیگر متعلقہ سرکاری حکمناموں کی پابندی کرتے ہوئے دونوں ریاستوں میں آبپاشی اور پینے کے پانی کی ضروریات کی تکمیل کیلئے سری سیلم ذخیرہ آب میں پانی کی اقل ترین حد برقرار کھے۔ دونوں ریاستوں کے درمیان جاری اس تنازعہ پر 29اکٹوبر دریائے کرشنا انتظامی بورڈ کے اجلاس پر سماعت ہوگی ۔ حکومت آندھراپردیش پہلے ہی اس مسئلہ پر گورنر ای ایس ایل نرسمہن اور بورڈ سے اپنا مدعا بیان کرچکی ہے ۔ آندھراپردیش کے وزیر آبپاشی نے دریائے کرشنا سے پانی کے استفادہ اور برقی کی پیداوار سے متعلق حکومت تلنگانہ کے دعوؤں کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا ۔حکومت آندھراپردیش کے ذرائع نے تلنگانہ حکومت کو چیلنج کیا کہ وہ پانی کے مسئلہ پر سپریم کورٹ میں اس( اے پی ) کے خلاف اپیل دائر کرے ۔ ذرائع نے کہا کہ ’’حکومت تلنگانہ کی گذشتہ چار ماہ کے دوران سپریم کورٹ میں کئی مرتبہ سرزنش کی جاچکی ہے اور کیا اس مسئلہ پر وہ عدالت عظمیٰ سے رجوع ہوتے ہوئے مزید سرزنش چاہتی ہے ‘‘ ۔

TOPPOPULARRECENT