Wednesday , December 19 2018

حکومت تین طلاق بِل بجٹ سیشن میں منظور کرانے کوشاں

لوک سبھا میں عدم مخالفت کے بعد راجیہ سبھا میں تحریک پیش کرنا کانگریس کا دوہرا عمل: اننت کمار
نئی دہلی 5 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) پیچیدہ تین طلاق بِل کی منظوری کو اپوزیشن کی جانب سے ناکام بنانے سے قطع نظر حکومت راجیہ سبھا میں اِسے بجٹ سیشن میں اِسی طرح منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے اور اُس کا دعویٰ ہے کہ وہ اِس بل کو منظور کرانے کی پابند عہد ہے۔ مانسون سیشن کے اختتام پر اخباری نمائندوں کو روئیداد سے واقف کراتے ہوئے وزیر پارلیمانی اُمور اننت کمار نے کانگریس پر حملہ بھی کیا جس نے لوک سبھا میں اِس بل کی مخالفت نہیں کی لیکن ایوان بالا میں اِس پر سخت موقف اختیار کیا۔ اننت کمار نے کہاکہ صدر کانگریس راہول گاندھی خواتین کو بااختیار بنانے کی بات کرتے ہیں لیکن جب اِس بارے میں عملی اقدام کا معاملہ آتا ہے تو راہ فرار اختیار کرجاتے ہیں۔ راجیہ سبھا میں کانگریس ہر روز اِس بِل کو روکنے کا بہانہ لیکر ایوان پہونچی۔ تاہم حکومت ’’ہماری مسلم بہنوں کو بااختیار بنانے کے لئے یہ قانون منظور کرانے کی پابند عہد ہے‘‘۔ مسلم خواتین (تحفظ حقوق برائے شادی) بِل 2017 ء جو بیک وقت تین طلاق کو مجرمانہ عمل قرار دیتے ہوئے ملزم مسلم مردوں کو تین سال سزائے قید کی گنجائش فراہم کرتا ہے، اُسے ایوان زیریں میں 28 ڈسمبر کو منظور کرلیا۔ تاہم متحدہ اپوزیشن نے اِسے راجیہ سبھا میں روک دیا جہاں کانگریس نے ایک تحریک پیش کی کہ اِس بل کو مزید تنقیح کے لئے منتخب کمیٹی سے رجوع کیا جائے، جس کی سرکاری بنچوں کی طرف سے پرزور مخالفت ہوئی۔ جب بجٹ سیشن کی 29 جنوری کو شروعات ہوگی تب یہ تحریک جسے سینئر کانگریس لیڈر آنند شرما نے پیش کیا، اُس پر غور کیا جائے گا۔ حکومتی ذرائع نے کہاکہ وہ بجٹ سیشن کے پہلے مرحلہ میں اِس بل کی منظوری چاہے گی اور اِس پر اتفاق رائے کے لئے اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ بات چیت منعقد کرے گی۔ حکومت نے بجٹ سیشن کے لئے شیڈول کی سفارش کردی ہے اِس لئے تین طلاق کے مسئلہ پر کوئی آرڈیننس لانے کا امکان نہیں ہے اور اِسے حکومت پارلیمنٹ کے آئندہ سیشن میں بھی منظور کرانے کی کوشش کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT