Saturday , December 16 2017
Home / سیاسیات / حکومت رابرٹ واڈرا کے خلاف ہر طرح کی تحقیقات کروائے

حکومت رابرٹ واڈرا کے خلاف ہر طرح کی تحقیقات کروائے

گذشتہ 41 ماہ میں کئی تحقیقات میں ایک بھی غلطی سامنے نہیں آئی ، کانگریس کا رد عمل
بنگلورو 17 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کی تنقیدوں کا جواب دیتے ہوئے کانگریس نے آج کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کو چاہئے کہ وہ پارٹی صدر سونیا گاندھی کے داماد رابرٹ واڈار کے خلاف ہر طرح کی تحقیقات کروائیں تاکہ یہ پتہ چلایا جاسکے کہ آیا انہوں نے کچھ بھی غلط کیا ہے یا نہیں ۔ کانگریس کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجیوالا نے کہا کہ رابرٹ واڈرا کو گذشتہ 41 مہینوں سے سیاسی مقاصد کیلئے نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے یہ تبصرہ کیا ۔ میڈیا میں کہا جا رہا تھا کہ رابرٹ واڈرا کے اسلحہ کے ڈیلر مفرور سنجے بنڈاری سے تعلقات ہیں۔ سرجیوالا نے کہا کہ جہاں تک رابرٹ واڈرا کے خلاف الزامات کا معاملہ ہے ہم صرف اتنا کہہ سکتے ہیں کہ نریندر مودی گذشتہ 41 مہینوں سے اقتدار پر ہیں۔ ہریانہ اور راجستھان مںے بی جے پی کی حکومت اور ہر طریقے سے جو کچھ بھی تحقیقات کروانا وہ ضروری اور مناسب سمجھیں وہ کروائی جانی چاہئیں اور غیر جانبداری سے کام کرتے ہوئے اس پر حقائق کو سامنے لانے کی ضرورت ہے ۔ یہاں قانون کی بالادستی سے کام لینا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ 41 مہینوں سے رابرٹ واڈرا کو نشانہ بنایا جا رہا ہے اور کئی طرح کے کمیشن قائم کرتے ہوئے تحقیقات کروائی گئیںاسکے باوجود بی جے پی ایک بھی معاملہ میں قانون کی خلاف ورزی کا پتہ نہیں چلا سکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان ہی دو ریاستوں راجستھان اور ہریانہ میں رابرٹ واڈرا پر الزامات عائد کئے گئے اور انہیں الزامات کی بنیاد پر پارٹی کو یہاں اقتدار حاصل ہوا تھا ۔ ایک قومی نیوز چینل نے کل دعوی کیا تھا کہ اسلحہ کے مفرور ڈیلر سنجے بھنڈاری نے 2002 میں رابرٹ واڈرا کے فضائی ٹکٹس بک کئے تھے ۔ میڈیا رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بی جے پی نے آج کانگریس قائدین سے کہا تھا کہ وہ اس مسئلہ پر اپنی خاموشی توڑیں۔ نئی دہلی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیر دفاع سیتارمن نے کہا کہ سونیا گاندھی اور راہول گاندھی کی خاموشی کو واڈرا کے خلاف الزامات کی توثیق سمجھا جائیگا ۔ وزیر اطلاعات و نشریات اسمرتی ایرانی نے کل راہول گاندھی کو اپنے ٹوئیٹ کے ذریعہ نشانہ بنایا تھا اور کہا تھا کہ وہ رابرٹ واڈرا کے ٹکٹس کے مسئلہ پر راہول گاندھی کے رد عمل کی منتظر ہیں۔ تاہم ٹائمز ناؤ اور ریپبلک نیوز چینلس کو آج کانگریس پارٹی کے دفتر میں سرجیوالا کی پریس کانفرنس میں شرکت کی اجازت نہیں دی گئی ۔ دونوں چینلس کو روکنے سے متعلق سوال پر سرجیوالا نے کہا کہ وہ میڈیا کے جذبات کو سمجھتے ہیں لیکن میڈیا کو چاہئے کہ وہ حقیقت کا آئینہ بتائے بی جے پی کا آئینہ بننے سے گریز کرے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی پہلے سے طئے شدہ ‘ جانبدارانہ اور فکس ایجنڈہ کے ساتھ برسر اقتدار جماعت کے ایجنٹ کے طور پر کام کرتے ہیں تو صحافت ختم ہوجاتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT