Friday , November 24 2017
Home / پاکستان / حکومت سے اختلافات کی خبروں کے افشاء پر پاکستانی

حکومت سے اختلافات کی خبروں کے افشاء پر پاکستانی

فوج کو تشویش ، رپورٹر کے بیرون سفر پر امتناع
اسلام آباد ۔ 14 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوج کی اعلیٰ قیادت نے عسکریت پسندی کے مسئلہ سے نمٹنے کے سوال پر گذشتہ ہفتہ منعقدہ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کے دوران ملک کی سیویلین اور فوجی قیادتوں کے درمیان پیدا شدہ اختلافات کی خبروں کے افشاء پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اس خبر کی اشاعت کے بعد متعلقہ رپورٹر کے ملک سے باہر جانے پر امتناع عائد کردیا گیا ہے۔ چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف نے کور کمانڈرس کانفرنس کے ایک اجلاس کی صدارت کی جو راولپنڈی میں واقع جنرل ہیڈکوارٹرس پر منعقد ہوا تھا۔ فوج کی طرف سے جاری ایک بیان کے مطابق ’’شرکائے اجلاس نے وزیراعظم کی رہائش گاہ پر منعقدہ اہم ترین سیکوریٹی اجلاس کے بارے میں غلط اور من گھڑت کہانی کی اشاعت پر گہری تشویش کا اظہار کیا اور اس کو قومی سلامتی کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا‘‘۔ پاکستان کے سرکردہ روزنامہ ڈان نے گذشتہ ہفتہ کہا تھا کہ لشکرطیبہ طالبان اور حقانی نیٹ ورک جیسے عسکریت پسندوں کو فوج کی خفیہ مدد کے مسئلہ پر سری لین حکومت اور فوجی ادارہ کے ذمہ داروں کے درمیان لفظی جھڑپ ہوگئی تھی‘‘۔ اس خبر کی اشاعت کے بعد متعلقہ جرنلسٹ سائرل الویدا کو بیرون ملک روانگی سے متعلق ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کردیا گیا جس کے بعد وہ پاکستان سے باہر نہیں جاسکتے۔ اس فیصلہ کے خلاف پاکستانی صحافیوں کی تنظیموں نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔

TOPPOPULARRECENT