Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت غیر مقیم ہندوستانیوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام

حکومت غیر مقیم ہندوستانیوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام

کے سی آر ، کے ٹی آر ، این آر آئیز کو ہتھیلی میں جنت دکھا رہے ہیں : محمد علی شبیر
حیدرآباد ۔ 16 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے باپ کے سی آر اور بیٹے کے ٹی آر پر خالی زبانی ہمدردی کرتے ہوئے این آر آئیز کو ہتھیلی میں جنت دکھاتے ہوئے سیاسی شعبدہ بازی کرنے کا الزام عائد کیا ۔ مسائل کو حل کرنے میں ٹی آر ایس حکومت ناکام ہوجانے کا دعویٰ کرتے ہوئے ودیشی بھون کی تعمیر سے مسائل حل نہیں ہوتے بلکہ ان کی فلاح و بہبود پر خصوصی توجہ دینے کا تلنگانہ حکومت سے مطالبہ کیا ۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ خلیجی ممالک میں تلنگانہ کے ورکرس کئی مسائل کا شکار ہے ۔ بروکرس اور ایجنٹس کے دیکھائے گئے سنہرے خوابوں سے متاثر ہو کر تلنگانہ کے مزدور خلیج کے علاوہ دوسرے ممالک میں کئی مسائل کا شکار ہیں اور یہاں تک کہ جیل کی صعوبتیں برداشت کررہے ہیں ۔ این آر آئیز کی فلاح و بہبود کے لیے حکومت کے پاس کوئی حکمت عملی ہے نہ سنجیدگی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے ور حکومت میں این آر آئیز کا زائد قلمدان ان کے پاس تھا ۔ انہوں نے بیروزگار نوجوانوں کو جو روزگار کی تلاش میں بیرونی ممالک کا رخ کررہے ہیں انہیں نیاک سنٹرس کے ذریعہ تکنیکی تربیت فراہم کی تھی ۔ جس کو ٹی آر ایس حکومت نے بند کردیا ہے ۔ اگر حکومت این آر آئیز کی فلاح و بہبود کے لیے سنجیدہ ہے تو تلنگانہ کے تمام اضلاع میں کم از کم 50 نیاک سنٹرس قائم کریں اور اس کے ذریعہ ویلڈنگ ، الیکٹریشن ، پلمبنگ کے علاوہ دوسرے مختصر مدتی کورسیس کے ذریعہ بیرونی ممالک جانے کے خواہش مند افراد کو تربیت فراہم کریں ۔ قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے حال ہی میں حیدرآباد میں مرکزی وزارت خارجہ کے زیر اہتمام منعقدہ اجلاس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ این آر آئیز کے لیے بھون تعمیر کرنے کا اعلان کیا گیا جو بے فیض ثابت ہوگا کیوں کہ بھون کی تعمیر کے لیے تین سال ضائع ہوجائیں گے ۔ اس کے بجائے حکومت شہر حیدرآباد کی ایک عمارت کو این آر آئی بھون کے لیے استعمال کریں ۔ منسوخ کردہ این آر آئیز کے راشن کارڈس کو بحال کیا جائے ۔ آروگیہ شری اسکیم کے تحت طبی سہولتیں فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ جب وہ این آر آئیز وزیر تھے تب انہوں نے خلیجی ممالک کا دورہ کرتے ہوئے تلگو عوام کے مسائل کا جائزہ لیا تھا ۔ جیل پہونچکر محروس این آر آئیز سے ملاقات کی اور کئی مزدوروں کو سرکاری مصارف پر مفت خصوصی طیارہ کے ذریعہ ریاست کو واپس لایا تھا ۔ خدمات کے دوران فوت ہوجانے والے مزدوروں کو بھی واپس لانے کے انتظامات کئے تھے ۔ محمد علی شبیر نے حیدرآباد میں این آر آئیز بھون کی تعمیر کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ فوری ان کے مسائل کو حل کرنا وقت کا تقاضہ ہے ۔ مزدوروں کو خلیجی ممالک روانہ کرنے والے ایجنٹس اور بروکرس کی حکومت تمام تفصیلات اکٹھا کرے اور مزدوروں کو انشورنس فراہم کرے ۔ حکومت این آر آئیز کو سنہرے خواب دکھانے کے بجائے ان کی فلاح و بہبود کے لیے ٹھوس اقدامات کرے ۔۔

TOPPOPULARRECENT