Thursday , December 14 2017
Home / سیاسیات / حکومت نے پاکستان کو مذاکرات سے فرار کا راستہ فراہم کیا

حکومت نے پاکستان کو مذاکرات سے فرار کا راستہ فراہم کیا

این ایس اے بات چیت کے مسئلہ پر حکومت ناکام ۔ کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد کا بیان
نئی دہلی 24 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وہ پاکستان کے ساتھ قومی سلامتی مشیران کی بات چیت کے مسئلہ سے ٹھیک انداز سے نمٹ نہیں سکی اور پاکستان کو فرار کی راہ فراہم کرتے ہوئے دنیا پر اس کا پردہ فاش کردینے کا ایک اور موقع گنوادیا ہے ۔ راجیہ سبھا میں قائد اپوزیشن غلام نبی آزاد نے حکومت پر تنقید کی کہ اس نے این ایس اے سطح کی بات چیت کیلئے ایجنڈہ کو قطعیت نہیں دی تھی ۔ یہ کام ملاقات کی تاریخ سے بہت پہلے ہوجانا چاہئے تھا ۔ اس نے پاکستان کو بات چیت سے فرار اختیار کرنے کا موقع فراہم کردیا ہے ۔ غلام نبی آزاد نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جموں و کشمیر میں دہشت گردی کو فروغ دینے میں پاکستان کی مدد کو فاش کردینے کا ایک اور موقع گنوا دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ( ہندوستان ) نے ایک مکتوب بھیجا ‘ انہوں ( پاکستان ) نے ایک مکتوب بھیجا ۔ ہم نے ایک تاریخ تجویز کی ۔ انہوں نے اپنے جواب میں تاخیر کی ۔ سفارت کاری ایسے نہیں کی جاتی ۔ انہوں نے کہا کہ ایجنڈہ بھیج دینا اور یہ سمجھ لینا کہ فریق ثانی نے اس کو قبول کرلیا ہے بیوقوفانہ عمل ہے ۔ ایجنڈہ بھیج دینے اور اس پر اتفاق کرلینے میں کافی فرق ہوتا ہے ۔ ہندوستان کو اچہئے تھا کہ وہ درپردہ سفارتی چینل کو استعمال کرتا یا پھر کسی عہدیدار کو پاکستان روانہ کرتا تاکہ پاکستان کے ساتھ ایجنڈہ کو قطعیت دی جاسکے ۔ غلام نبی آزاد مرکزی وزیر سشما سوراج کے اس ریمارک پر رد عمل کا اظہار کر رہے تھے جس میں انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے تواریخ کی تجویز پیش کی تھی اور پاکستان نے ایجنڈہ بہت تاخیر سے روانہ کیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ملاقات کی تاریخ کے تعین سے قبل ایجنڈہ کو قعطیت نہیں دیتے ہوئے ہماری حکومت نے پاکستان کو بات چیت سے فرار حاصل کرنے کا ایک اچھا موقع فراہم کردیا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور اس کے قومی سلامتی مشیر سرتاج عزیز ہندوستان کے ساتھ بات چیت نہیں چاہتے تھے اور ہندوستان نے انہیں اس کا موقع فراہم کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT