Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت پر کانگریس قائدین کی تنقید سیاسی بقا کی مشق

حکومت پر کانگریس قائدین کی تنقید سیاسی بقا کی مشق

ملک کی موجودہ ابتر صورتحال کے لیے کانگریس ہی ذمہ دار ، گورنمنٹ چیف وہپ کا بیان

ملک کی موجودہ ابتر صورتحال کے لیے کانگریس ہی ذمہ دار ، گورنمنٹ چیف وہپ کا بیان
حیدرآباد۔ 7 جولائی (سیاست نیوز) گورنمنٹ چیف وہپ کے ایشور نے تلنگانہ حکومت پر تنقیدوں کے لئے کانگریس پارٹی کو نشانہ بنایا۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کے ایشور نے کہا کہ تلنگانہ کے کانگریس قائدین اپنی سیاسی بقاء اور عوامی ہمدردی کیلئے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی ملک کی موجودہ ابتر صورتِ حال کے لئے ذمہ دار ہے۔ کانگریس دورِ حکومت میں مرکز کے کئی اسکامس منظر عام پر آئے لیکن خاطیوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ آج اسی کانگریس پارٹی کے قائدین عوامی فلاح و بہبود میں مصروف تلنگانہ حکومت پر نکتہ چینی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین کے پاس دراصل کہنے کیلئے کچھ نہیں ہے، لہذا حکومت کی مختلف اسکیموں کو نشانہ بناتے ہوئے ریاست کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ ایشور نے کہا کہ ٹی آر ایس نے کانگریس کی بے قاعدگیوں کے بارے میں جو سوالات کئے تھے، ان کا جواب دیئے بغیر کانگریس قائدین مختلف اسکیمات میں بے قاعدگیوں کا پروپگنڈہ کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دراصل کے سی آر نے عوامی بھلائی کیلئے جن اسکیموں کا آغاز کیا ہے انہیں اپوزیشن برداشت کرنے سے قاصر ہے۔ جبکہ تلنگانہ عوام کی کارکردگی اور بھلائی سے متعلق اقدامات سے مطمئن ہے۔ گورنمنٹ چیف وہپ نے کہا کہ موسم گرما میں تلنگانہ ریاست کو کسی کٹوتی کے بغیر برقی سربراہی جاری رکھنا کے سی آر حکومت کا کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ برقی پیداوار میں اضافہ کے ذریعہ حکومت 24 گھنٹے برقی سربراہی کا منصوبہ رکھتی ہے۔ انہوں نے کانگریس قائدین سے سوال کیا کہ ان کے دور حکومت میں کبھی اس طرح کی فلاحی و ترقیاتی اسکیمات کا انہیں خیال آیا؟ انہوں نے کہا کہ سنہرے تلنگانہ کی تشکیل کیلئے چندر شیکھر راؤ نے کئی فلاحی اسکیموں کا آغاز کیا ہے جس سے لاکھوں غریب خاندان مستفید ہورہے ہیں۔ انہوں نے کانگریس قائدین کو مشورہ دیا کہ وہ تنقیدوں کے بجائے حقائق کو تسلیم کرتے ہوئے حکومت کے فلاحی و ترقیاتی منصوبے میں تعاون کریں۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ میں کانگریس اور تلگو دیشم کیلئے اب کوئی جگہ نہیں ہے کیونکہ عوام دونوں پارٹیوں کو اچھی طرح آزما چکے ہیں اور تلنگانہ میں مستقبل صرف ٹی آر ایس کا ہی ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT